ایران میں یوکرائنی طیارہ گر کر تباہ، ایرانی تحقیق کاروں کو ابتدائی تحقیقات کے دوران کیا ملا ؟ جانئے

ایران میں یوکرائنی طیارہ گر کر تباہ، ایرانی تحقیق کاروں کو ابتدائی تحقیقات ...
ایران میں یوکرائنی طیارہ گر کر تباہ، ایرانی تحقیق کاروں کو ابتدائی تحقیقات کے دوران کیا ملا ؟ جانئے

  



دبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن )ایرانی تحقیق کاروں نے اپنی ابتدائی رپورٹ میںکہاہے کہ یوکرائنی طیارہ گرنے سے قبل ہی آگ کی لپٹوں میں گھرا ہوا تھا ، طیارے میں 176 افراد سوار تھے جو کہ تمام ہلاک ہو گئے ہیں ۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ” رائٹرز “ کے مطابق یوکرائن کا طیارہ ایران کے دارلحکومت تہران سے کیف جارہا تھا کہ پرواز بھرنے کے چند منٹ بعد ہی اس کا رابطہ منقطع ہو گیا اور وہ گر کر تباہ ہو گیا جس میں 176 افراد سوار تھے ۔ایرانی سول ایوی ایشن آرگنائزیشن کی رپورٹ میں عینی شاہدین کا حوالہ دیا گیاہے کہ انہوں نے دیکھا کہ طیارہ میں آگ بھڑکی ہوئی ہے اور وہ تیزی کے ساتھ نیچے آ رہاہے ۔

تین سال پرانے بوئنگ طیارے کی مرمت کا کام دو دن پہلے چھ جنوری کو ہی کیا گیا تھا ، طیارے میں پرواز بھرتے ہی فنی خرابی پیدا ہوئی اور تباہ ہونے سے پہلے اس نے قریبی ایئر پورٹ کی جانب بڑھنا شروع کر دیا تھا۔رپورٹ میں فنی خرابی کو واضح نہیں کیا گیا ہے تاہم کینیڈین سیکیورٹی کے ذرائع نے رائٹرز سے گفتگو میں بتایا کہ اس بات کا ثبوت موجود ہے کہ جہاز کا ایک انجن بہت زیادہ گرم ہو چکا تھا ۔

یوکرائنی طیارہ ایران کی جانب سے عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل فائرکیے جانے کے کئی گھنٹوں کے بعد گر کر تباہ ہواہے اور یہ افواہیں بھی زیر گردش ہیں کہ مبینہ طور میزائل طیارے سے ٹکرایا ہے ۔

رائٹرز نے اپنی رپورٹ میں بتایاہے کہ پانچ سیکیورٹی ذرائع نے نام نہ ظاہر کرنے کی شر ط پر بتایا ہے کہ مغربی انٹیلی جنس ایجنسیوں کے اندازے کے مطابق طیارے میزائل لگنے کے باعث تباہ نہیں ہوا بلکہ اس میں فنی خرابی پیدا ہوئی تھی جو کہ اس کی تباہی کا باعث بنی ۔ پانچ سیکیورٹی ذرائع میں تین امریکی ، ایک یورپی اور کینیڈین شامل ہے ۔

مزید : بین الاقوامی


loading...