اب پاکستان کسی کی جنگ میں شریک نہیں ہوگابلکہ ہم اب یہ کام کریں گے،وزیراعظم عمران خان کا اعلان

اب پاکستان کسی کی جنگ میں شریک نہیں ہوگابلکہ ہم اب یہ کام کریں گے،وزیراعظم ...
اب پاکستان کسی کی جنگ میں شریک نہیں ہوگابلکہ ہم اب یہ کام کریں گے،وزیراعظم عمران خان کا اعلان

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اب پاکستان کسی اور کی جنگ میںشریک نہیں ہوگا۔پاکستان وہ ملک بنے گا جو دوسرے ملکوں میں امن پیدا کرے گا۔انہوں نے کہا ہم پوری کوشش کریں گے کہ سعودی عرب اور ایران میں دوستی کرائیں گے۔

وزیراعظم عمران خان نے اسلام آبادمیں ہنرمندنوجوان پروگرام کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا یہ پروگرام پاکستانی قوم کو اس قوم میں بدل دے گاجس کا خواب پاکستان بنتے وقت دیکھا گیاتھا۔اس قوم کا خواب بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے دیکھا اور ان سے بھی پہلے علامہ محمد اقبال نے دیکھا۔انہوں نے کہا اداروں، ملکوں اور قوموں کی زندگی میں اتار چڑھاو آتا رہتا ہے ۔ہمیشہ خوش رہنا صرف پریوں کی کہانی میں ہوتا ہے۔

انہوں نے کہاوزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ2019استحکام جبکہ 2020روزگار کاسال ہوگا۔ پاکستان مشکل وقت سے نکل رہاہے۔ہنر سیکھنے کے بعد نوجوان حکومت سے قرض حاصل کرسکیں گے۔

انہوں حکومت کا روڈ میپ بتاتے ہوئے کہا ہم چار پوائنٹس پر کام کررہے ہیں، نمبر ایک ، اپنے غریب لوگوں کا خیال رکھنا ہے وہ ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا ہمارے ملک میں برکت اس لئے ختم ہوئی کیونکہ صرف ایک طبقہ امیر ہوتا گیا باقی سب غریب۔اس کی وجہ ناانصافی ہے کیونکہ یہاں امیر کیلئے الگ قانون ہے غریب کیلئے اور،یہاں صحت ، تعلیم اور دیگر تمام شعبوں میں امیر اور غریب کا فرق ہے۔

عمران نے کہا امریکن ڈریم کا مطلب یہی ہے کہ لوگوں کو مواقع دیئے گئے اور وہ ترقی کرتے گئے ان میں پاکستانیوں کی بھی ایک بڑی تعداد شامل ہے۔

انہوں نے کہا ہم نے سب سے پہلے احساس پروگرام شروع کیا، ایک سو نوے ارب روپے غریب طبقے کو اوپر لانے کیلئے خرچ کیاہے۔انہوں نے کہا کہ احساس ہے کہ یہ مشکل وقت ہے، پیسہ کم ہے ، قرضے ہیں ، لوگوں کو مشکل وقت سے گزرنا پڑرہا ہے۔انہوں نے کہا سب سے پہلے بے گھر لوگوں کیلئے پناہ گاہیں بنائیں ایک سال پہلے شروع کئے گئے اس منصوبے کے تحت آج کئی پناہ گاہیں کام کررہی ہیں جو رہائش اور کھانا دے رہی ہیں۔انہوں نے کہا پناہ گاہ کی انتظامیہ کو ہدایات دی ہوئی ہیں کہ وہ گشت کریں اور جو سڑک پر سوئے ہوئے لوگ ہوں انہیں پناہ گاہ منتقل کریں۔

انہوں نے کہا یوٹیلیٹی اسٹورز کی حالت بہتر کی وہاں سستی اشیا کی فراہمی یقینی بنائی۔انہوں نے کہاایک اور انقلابی قدم جو انہوں نے اٹھایا وہ ہیلتھ کارڈ ہے۔صحت کارڈ وہ سہولت ہے جو غریبوں کو علاج کی سہولت دیتی ہے۔

انہوں نے کہا ملک بھر میں ساٹھ لاکھ لوگوں کو یہ کارڈز دے دیئے گئے ہیں اور غریب گھرانے کے لوگ سات لاکھ بیس ہزار روپے تک کا علاج کرواسکتے ہیں۔اس پروگرام کے تحت ملک بھر کے تمام غریب لوگوں کو علاج کی سہولت میسر ہوگی۔انہوں نے کہا انتہائی ضرورت مند لوگوں کیلئے لنگر خانے کھول رہے ہیں۔

انہوں نے کہا نچلے طبقے کے بعد دوہزار بیس میں لوگوں کو روزگار دینے کا فیصلہ کیاگیاہے،انہوں نے کہا اس مرحلے میں پچاس لاکھ لوگوں کو گھر بنا کر بھی دیئے جائیں گے۔انہوں نے کہا تنخواہ دار طبقے کو آسان قرضے حاصل کرکے گھر بنانے میں آسانی ہوگی۔ انہوں نے بتایا یہ معاملہ عدالتی کارروائی کی وجہ سے رکا ہوا ہے جیسے ہی لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ آئے گااس پروگرام پر عملدرآمد شروع کردیا جائے گا اور اس سے چالیس صنعتوں کو اوپر اٹھنے کا موقع ملے گا۔

انہوں نے کہا ہم جدت لاکر اپنی زمینوں سے پیداوار کی شرح کو انتہائی حد تک بڑھا سکتے ہیں۔انہوں نے کہااس حوالے سے چین کے ساتھ ایم اویو سائن ہوچکے ہیں ان کی معاونت سے اپنے ملک کی شرح پیداوار بڑھائیں گے۔

انہوں نے کہا پاکستان سونے ، تانبے سمیت متعدد دھاتوں سے مالا مال ہے۔اور اب دھاتوں کے حصول کیلئے کوششیں کی جائیں گی، ان دھاتوں سے اتنی آمدن متوقع ہے کہ پاکستان کا سارا قرض اتر سکتاہے۔

انہوں نے کہا دنیا بھر میں ہمارے ہاں دوسری بڑی نوجوان افرادی قوت ہے۔اگر اسی نوجوان نسل کو فنی تربیت اور مناسب تعلیم دے دی جائے تو یہ اس ملک کو سپرپاور بناسکتے ہیں۔بدقسمتی سے ہم نے نوجوانوں کی فلاح و بہبودپر پیسہ خرچ نہیں کیا نہ ہی مناسب تعلیم دی۔

اس ہنر مندپروگرام سے نوجوانوں کی ترقی کی راہ ہموار ہوگی۔اس پروگرام سے نوجوان پاکستان کو اٹھا لے گا۔

اس پروگرام کیلئے تیس ارب روپے رکھے گئے ہیں جس کے تحت پہلے مرحلے میں پانچ لاکھ نوجوانوں کو تربیت دی جائے گی اور پہلے مرحلے میں دس ارب روپے خرچ کئے جائیں گے۔انہوں نے کہا یہ صنعتی انقلاب ثابت ہوگا۔اور پہلے مرحلے میں ستر سنٹرز مدرسوں میں کھولے جائیں گے۔

انہوں نے کہا پہلے مرحلے میں سمارٹ اسکول کھولے جائیں جس سے جدید ترین علوم کا حصول ممکن ہوگا۔انہوں نے کہا تمام ٹینیکل سنٹرز کی درجہ بندی کی جائے گی۔ایسے پروگرامز متعارف کرائے جائیں گے جن کی مدد سے نوجوانوں کو روزگار کے حصول میں آسانی ہوگی۔

آخر میں وزیراعظم نے کہا اب پاکستان کسی اور کی جنگ میںشریک نہیں ہوگا۔پاکستان وہ ملک بنے گا جو دوسرے ملکوں میں امن پیدا کرے گا۔انہوں نے کہا ہم پوری کوشش کریں گے کہ سعودی عرب اور ایران میں دوستی کرائیں گے۔

انہوں نے کہاٹرمپ سے بھی کہا تھا کہ اس کی ایران سے دوستی کرادیں گے۔عمران نے کہا جنگ کوئی بھی نہیں جیتتا،بظاہر فاتح بھی جنگ میں کامیاب نہیں ہوتا۔انہوں نے کہا یہ ملک اب صرف امن کا داعی بنے گااور دوسرے ملکوں میں امن و امان کو فروغ دینے کیلئے کردار ادا کرے گا۔

مزید : اہم خبریں /قومی