اشتعال انگیز تقریر‘اداروں کیخلاف بیانات، پراسیکیوشن کو دلائل دینے کی ہدایت 

 اشتعال انگیز تقریر‘اداروں کیخلاف بیانات، پراسیکیوشن کو دلائل دینے کی ...

  

لاہور(نامہ نگار)ضلع کچہری کی عدالت کے جوڈیشل مجسٹریٹ حافظ نفیس نے کیپٹن (ر)محمد صفدر کے خلاف اشتعال انگیز تقریر اور اداروں کے خلاف بیانات کے کیس کی سماعت12فروری تک ملتوی کرتے ہوئے پراسیکیوشن کو دلائل دینے کی ہدایت کر دی ہے،دوران سماعت فاضل جج نے ایک ملزم جہانزہب اعوان کی جانب سے عدالت میں پیش نہ ہونے پراس کے وارنٹ گرفتاری بھی کر دیئے ہیں،گزشتہ روزعدالت نے کیپٹن (ر) صفدر کو حاضری لگا کر جانے کی اجازت دے دی،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو کیپٹن (ر)محمد صفدر کے وکیل سید فرہاد علی شاہ نے ڈپٹی کمشنر کی جانب سے دائر استغاثہ پر دلائل دیئے،وکیل نے مزید کہا کہ  مقدمہ میں ایف آئی آر کے وقت صرف ایک دفعہ 16 ایم پی او شامل تھی،اب یہ 124 (اے) اور 506 (بی)دھمکیاں دینے کی دفعات کیسے شامل کر لی گئیں،پراسیکیوشن نے یہ دفعات قانون کے خلاف لگائیں ہیں،کیپٹن (ر) محمدصفدر کے خلاف تھانہ اسلام پورہ پولیس نے اشتعال انگیز تقاریر کرنے کا مقدمہ درج کررکھاہے جس میں ملزم کی سیشن عدالت سے ضمانت منظور ہوچکی  دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کے رہنما کیپٹن (ر)محمد صفدرنے کہا ہے کہ میاں نواز شریف میڈ ان پاکستان ہیں،یہ ان کا اپنا ملک ہے وہ جب چاہئیں آجاسکتے ہیں ان خیالات کا اظہار اشتعال انگیز تقاریر کیس میں عدالت میں پیشی کے بعدمیڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔

، انہوں نے مزید کہا کہ شریف خاندان گرفتاریوں سے گھبرانے والے نہیں، یہ حکومت ایک دو ماہ میں ختم ہو جائے گی،میں نے مولانا کا ہاتھ اس لئے چوما کہ انہوں نے ختم نبوت کی بات کی۔

حکومت کہہ رہی ہے کہ پی ڈی ایم کے غبارے سے ہوا نکل گئی ہے،غبارہ ہمارا ہے ہم ہوا بھریں یا نکالیں، جلد دیکھیں گے کہ کس کے مشکیزے سے ہوا نکلتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اس طرح چل رہی ہے جیسے موت کے کنوئیں میں موٹرسائیکل، ان کو تو یقین نہیں تھا کہ حکومت میں آئیں گے، یہ رات کوسوئے تھے ان کوجگا کربتایا کہ آپ کی حکومت آگئی ہے،یہ تووقت بتائے گا کہ کس کے مشکیزے سے ہوا نکلتی ہے،نیب کو اب فضل الرحمان کو نوٹس بھیجنے کی ہمت نہیں ہو گی۔

مزید :

علاقائی -