بلیک میل نہیں ہوں گا، ہزارہ برادری آج تدفین کرے گارنٹی دیتا ہوں، فوری کوئٹہ پہنچوں گا بھارت پاکستان میں فرقہ وارانہ انتشار پھیلانا چاہتا ہے: وزیراعظم 

      بلیک میل نہیں ہوں گا، ہزارہ برادری آج تدفین کرے گارنٹی دیتا ہوں، فوری ...

  

 اسلام آباد،لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،جنرل رپورٹر،نیوزایجنسیاں)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مچھ واقعہ پرہزارہ برادری کے تمام مطالبات مان لیے ہیں،وزیراعظم کی آمد سے تدفین کو مشروط کرنا مناسب نہیں، آپ آج تدفین کردیں میں آج ہی کوئٹہ پہنچوں گا، کسی بھی ملک کے وزیراعظم کو اس طرح بلیک میل نہیں کرتے ورنہ ہر کوئی بلیک میل کرے گا، خاص طور پر ڈاکوں کا ایک ٹولہ ڈھائی سال سے کرپشن کیسز معاف کرنے کیلئے بلیک میل کررہا ہے،بھارت پاکستان میں فرقہ وارانہ انتشار پھیلانا چاہتا ہے، کراچی میں علماء کا قتل اور مچھ واقعہ بھی اسی سازش کا حصہ ہے، خفیہ ایجنسیوں نے چار بڑے واقعات کو رونما ہونے سے روکا، کابینہ میں بتایا تھا علما کو قتل کرکے انتشار پھیلایا جائیگا، بڑی مشکل سے ہم نے آگ بجھائی۔سپیشل اکنامک زونز اتھارٹی کی لانچنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شاید سب سے زیادہ ظلم ہزارہ برادری کے لوگوں پر ہوا، خاص طور پر گزشتہ 20 برسوں میں 11ستمبر 2001 کے بعد ان کے اوپر دہشت گردی، ظلم اور قتل کیا گیا وہ کسی اور برادری پر نہیں ہوا۔انہوں نے کہا کہ جب بڑے بڑے سانحات ہوئے تو میں وہاں گیا اور میں نے ان کا خوف دیکھا، جب یہ مچھ کا واقعہ ہوا جہاں ہزارہ برادری کے 11 مزدوروں کو بیدردی سے قتل کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ یہ اس سازش کا حصہ ہے جس کا میں نے گزشتہ مارچ میں کابینہ کو بتایا تھا اور عوامی بیانات دئیے تھے کہ بھارت پوری طرح پاکستان میں انتشار پھیلانے کی کوشش کر رہا ہے اور ایک جگہ ہے فرقہ ورانہ فسادات، جہاں بھارت کا منصوبہ ہے کہ شیعہ، سنی علما کو قتل کرنا۔انہوں نے کہا کہ میں ملک کی خفیہ ایجنسی کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ انہوں نے 4 بڑے دہشت گردی کے واقعات ہمارے اداروں کی وجہ سے بچ گئے تاہم اس کے باوجود کراچی میں ایک ہائی پروفائل سنی عالم کا قتل کیا گیا، جس پر بڑی مشکل سے ہم نے آگ بجھائی جوکہ فرقہ وارانہ تقسیم ہونے والی تھی۔انہوں نے کہا کہ مچھ میں جو ہوا ہے، ہمیں پہلے سے اندازہ تو تھا، اس واقعہ کے بعد میں نے سب سے پہلے وزارت داخلہ کو بھیجا، جنہوں نے بات کی اور اس کے بعد دو وفاقی وزرا کو وہاں بھیجا یہ بتانے کیلئے کہ یہ حکومت ان کے ساتھ کھڑی ہے۔انہوں نے کہاکہ ان لواحقین کے گھروں میں کمانے والوں کو مار دیا گیا، میں نے انہیں یقین دہانی کرائی کہ ہم ان کا پوری طرح خیال رکھیں گے، انہوں نے ہم سے جو بھی مطالبات کیے ہم نے تمام مان لیے تاہم ان کا یہ مطالبہ ہے کہ وزیراعظم آئینگے تو ہم لاشوں کو دفنائیں گے، تاہم میں نے انہیں پیغام پہنچایا ہے کہ جب آپ کے تمام مطالبات مان لیے ہیں تو یہ مطالبہ کرنا کہ جب تک وزیراعظم آئیں گے نہیں ہم تدفین نہیں کریں گے مناسب نہیں۔وزیر اعظم نے ڈیجیٹل نظام کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس نظام سے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کی نگرانی کرنے اور ضلعی انتظامیہ کی کارکردگی جانچنے میں مدد ملے گی، نظام سے فیصلہ سازی کے عمل میں شفافیت کا عنصر نمایاں ہوگا،عالمی معیشت کرونا وباء سے متاثر ہوئی تاہم اللہ تعالیٰ کی مدد اور حکومت کے بروقت اقدامات سے پاکستان اس مشکل صورتحال سے نبردآزما ہوا اور پوری دنیا ہمارے اقدامات کی معترف ہے۔ جمعہ کو وزیر اعظم عمران خان کو پاکستان شماریات بیورو کی طرف سے افراطِ زر کی شرح کو مد نظر رکھتے ہوئے فیصلہ سازی کے نظام اور کورونا وباء کے سماجی اور معاشی اثرات پر بریفنگ دی گئی۔وزیر اعظم عمران خان نے ناجائز منافع خوری اور غیر قانونی ذخیرہ اندوزی میں ملوث عناصر کے خلاف بلا تفریق سخت اقدامات لینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ ایسے عناصر غریب دشمن ہیں جو کسی رعایت کے مستحق نہیں، اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اور وافر مقدار میں دستیابی کو یقینی بنایا جائے۔ جمعہ کو وزیر اعظم کی زیر صدارت چینی کی قیمتوں اور دستیابی کے حوالے سے جائزہ اجلاس ہوا جس میں چیف سیکریٹری پنجاب نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس کو صوبہ پنجاب میں گنے کی فصل، کرشنگ اور چینی کے موجودہ اسٹاک کے بارے تفصیلی بریفنگ دی۔وزیر اعظم نے کہا کہ اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اور وافر مقدار میں دستیابی کو یقینی بنایا جائے۔وزیر اعظم نے ناجائز منافع خوری اور غیر قانونی ذخیرہ اندوزی میں ملوث عناصر کے خلاف بلا تفریق سخت اقدامات لینے کی ہدایت کی۔وزیر اعظم نے کہا کہ ایسے عناصر غریب دشمن ہیں جو کسی رعایت کے مستحق نہیں۔وزیراعلی عثمان بزدار کو فون کر کے کورونا سے صحت یاب ہونے پر نیک خواہشات کا اظہار کیا۔وزیراعظم عمران خان کا جمعہ کے روز طے شدہ دورہ لاہور وزیراعلی عثمان بزدار کی صحت کے باعث ملتوی کیا گیا۔ وزیراعظم نے فون پر وزیراعلی کی مکمل صحت یابی کی دعا کی۔عمران خان نے کہا ہے کہ علاج معالجے کی معیاری سہولیات ہر شہری کا بنیادی حق ہے، ہماری حکومت نے صحت کے شعبے میں اصلاحات شروع کی ہیں جن کا مقصد غریب اور مستحق افراد کی مدد کرنا ہے، پرائیویٹ سیکٹر کو دور افتادہ علاقوں میں ہسپتال قائم کرنے کے لیے حکومت کی طرف سے ہر ممکن تعاون فراہم کیا جائے گا، انہوں نے ان خیالات کا اظہار جمعہ کو  صوبہ پنجاب میں یونیورسل ہیلتھ کوریج کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، وزیر اعظم عمران خان کو صوبہ پنجاب میں یونیورسل ہیلتھ کوریج پر بریفنگ دی گئی،بریفنگ میں معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان موجودتھے جبکہ  وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے ویڈیو لنک کی ذریعے اجلاس میں شرکت کی وزیر اعظم کو آگاہ کیا گیا کہ صوبہ پنجاب کے تمام مستقل رہائشیوں کو دسمبر 2021تک صحت کارڈ کی سہولت میسر ہو جائے گی جس کی بدولت سرکاری اور پرائیویٹ ہسپتالوں میں علاج ممکن ہو گا،وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ پنجاب بھر میں 70 لاکھ گھرانوں کو صحت کارڈ کی سہولت میسر کی جائے گی۔

وزیراعظم 

 اسلام آباد، ننکانہ صاحب،کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں)وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ وزیراعظم نے بلیک میلنگ کا لفظ انہی لوگوں کیلئے استعمال کیاجو ہر معاملے پر سیاست کرتے ہیں،  انسانیت سے عاری،بے حس وہ ہیں جوالمیوں پربھی سیاسی دوکان چمکانے سے باز نہیں آتے۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ وزیراعظم مظلوموں کے دکھوں میں برابر کے شریک ہیں اور متاثرہ خاندانوں کو انصاف دلانا اپنااولین فریضہ سمجھتے ہیں۔ وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ پاکستان میں دہشت گردی کی نئی لہرہے،اسلام آباد لاہور پشاور اور کوئٹہ میں دہشتگردی کے خطرات ہیں،ہزارہ کمیونٹی کے قتل میں انٹرنیشنل مافیا ملوث ہے، داعش سمیت دیگر تنظیموں کا نام آ رہا ہے مگر ابھی بطور وزیر داخلہ کنفرم نہیں بتا سکتا، مچھ واقعہ کچھ لوگ سیاست کررہے ہیں، بلاول اور مریم کی تقریر سیاسی تھی،جیسے سیکیورٹی کلیئرنس دی جائیگی وزیراعظم کوئٹہ روانہ ہو جائیں گے۔ وفاقی وزیر انسداد منشیات بریگیڈیئر (ر) اعجاز احمد شاہ نے کہا ہے کہ وزیراعظم سمیت پوری پاکستانی قوم سانحہ مچھ پر غمزدہ ہے، بلوچستان کے حالات خراب کرنے میں بھارت ملوث ہے، واقعہ میں ملوث عناصر کو کیفر کردار تک پہنچائیں گے۔ننکانہ صاحب کے علاقے کوٹ فاضل میں پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں کی طرف سے دیئے گئے ظہرانہ میں شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وفاقی وزیر انسداد منشیات نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی کئی سال پہلے کی پیشگوئی کے مطابق ساری اپوزیشن ان کی مخالفت میں اکٹھی ہو گئی ہے۔وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی کا کہنا ہے کہ تمام مطالبات منظور ہونے کے باوجود وہ کون ہیں جو شہدا کی لاشوں پر سیاست کر رہا ہے۔علی زیدی نے مزید کہا کہ انسانی جان کی کوئی قیمت نہیں چکا سکتا تاہم معاوضے کی رقم کافی بڑھا دی ہے۔وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے ایک انٹرویومیں فواد چوہدری نے کہا کہ مظاہرین کے ساتھ معاملات اچھے ہینڈل نہیں ہوئے جتنے ہونے چاہیے تھے، ہزارہ برادری کی کلنگ ایک پیچیدہ معاملہ ہے، ہزارہ برادری کی کلنگ اندرون سے زیادہ بیرون کامعاملہ ہے۔فواد چوہدری نے کہا کہ بلوچستان میں دہشت گردی میں باقاعدہ بیرونی ہاتھ ہے، پی ٹی آئی کی حکومت نہیں ماضی میں بھی ایسی سازشیں ہوتی رہیں، مودی اوراجیت دوول کی باقاعدہ بلوچستان میں دہشت گردی کی پالیسی ہے۔بلوچستان کے صوبائی وزیر داخلہ میر ضیا اللہ لانگو نے کہا ہے کہ دہشت گردوں سے متعلق اہم معلومات ملی ہیں، سانحہ مچھ میں ملوث عناصر کیخلاف گھیرا تنگ کیا جا رہا ہے جنہیں جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔ دھرنے کے شرکا سے اپیل ہے کہ وہ شہدا کی تدفین کردیں جبکہ افغان حکومت نے بھی اپنے 3 شہریوں کی حوالگی کی درخواست کی ہے۔شہبازگل کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ سانحہ مچھ پر حالات خراب کرنا چاہتے ہیں۔

وزراء .

مزید :

صفحہ اول -