سانحہ مچھ میں جاں بحق کان کن کے بیٹے نے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کردی

سانحہ مچھ میں جاں بحق کان کن کے بیٹے نے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کردی
سانحہ مچھ میں جاں بحق کان کن کے بیٹے نے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کردی

  

کوئٹہ (ویب ڈیسک) بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں سانحہ مچھ میں قتل ہونے والے کان کنوں کے لواحقین میتوں کے ساتھ کئی روز سے دھرنا دیے بیٹھے تھے اور اب حکومت سے مذاکرات کے بعد جسد خاکی قبرستان پہنچا دیئے گئے ،جاں بحق کان کن رمضان علی کے بیٹے سجاد حسین نے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کردی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے مشروط طور پر کوئٹہ کا دورہ کرنے کی حامی بھری ہے تاہم اب سانحہ مچھ کے لواحقین نے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کردی ہے۔  جاں بحق کان کن رمضان علی کے بیٹے سجاد حسین نے بھوک ہڑتال کیلئے کوئٹہ پریس کلب کے باہر کیمپ لگالیا۔

خیال رہے کہ ایک تقریب سے خطاب میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم مظاہرین کے تمام مطالبات مان چکے ہیں لیکن ان کا ایک مطالبہ ہے کہ وزیرعظم آئے تو شہدا کو دفنائیں گے، ان کو کہا ہے کہ کسی بھی ملک کے وزیراعظم کو ایسے بلیک میل نہیں کیا جاسکتا، اس طرح ہر کوئی بلیک میل کرے گا، خاص طور پر ڈاکوو¿ں کا ایک ٹولہ ڈھائی سال سے کرپشن کیسز معاف کرنے کے لیے بلیک میل کررہا ہے۔اس پر شہداء کمیٹی نے بھی وزیراعظم کے آنے تک تدفین سے انکار کردیا۔ بعدازاں گزشتہ شب حکومتی نمائندوں کی طرف سے بتایا گیا کہ مذاکرات کامیاب ہوگئے ہیں، مطالبات پر اتفاق ہوگیا ہے اور لواحقین اپنے پیاروں کی تدفین پر راضی ہوگئے ہیں اور آخری اطلاعات کے مطابق جسد خاکی قبرستان پہنچا دیئے گئے ہیں اور تدفین کے مراحل جاری ہیں۔ 

مزید :

علاقائی -بلوچستان -کوئٹہ -