برطانوی سائنس دانوںکا کارنامہ، کینسر کے علا ج مےں نمایاں پیش رفت

برطانوی سائنس دانوںکا کارنامہ، کینسر کے علا ج مےں نمایاں پیش رفت

  



لندن (نیوز ڈیسک) برطانوی سائنس دانوں نے کینسر کے علا ج میں نمایاں پیش رفت کرتے ہوئے پہلی دفعہ یہ دریافت کرلیا ہے کہ کینسر کے خلیہ کس طرح جسم کے ایک حصے سے دوسرے حصوں تک پھیلتے ہیں اور اس دریافت سے ان خلیوں کے پھیلاﺅ کو روکنے میں مدد ملے گی۔ کینسر کا مرض اس وقت خطرناک اور مہلک صورتحال اختیار کرلیتا ہے جب متاثرہ خلیے سارے جسم میں پھیلنا شروع ہوجاتے ہیں اور انہیں کنٹرول کرنا ممکن نہیں رہتا۔ یونیورسٹی کالج لندن کی رہنمائی میں کی گئی تحقیق میں برطانیہ کی متعدد یونیورسٹیوں نے حصہ لیا۔ سائنسی جریدے ”سیل بائیولوجی“ میں شائع ہونے والی تحقیق میں پروفیسر رابرٹو میٹر کا کہنا ہے کہ پہلی دفعہ یہ دریافت کیا گیا ہے کہ کینسر کے خلیے مائع شکل اختیار کرکے جسم میں پھیلتے ہیں۔ مائع حالت میں تبدیل ہونے کے بعد یہ خلیات جسم میں تنگ گزرگاہوں سے گزرتے ہوئے اہم اعضاءتک پھیل جاتے ہیں۔ جسم میں خلیات ایک دوسرے سے جڑے ہوتے ہیں اور مخسوص سانچوں میں ڈھلے ہوتے ہیں۔ پروفیسر رابرٹو نے بتایا کہ کینسر کے خلیات میں رابطے کمزور پڑ جاتے ہیں جس کی وجہ سے وہ مائع شکل اختیار کرتے ہوئے جسم کے ایک عجو سے دوسرے کی طرف پھیل جاتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس کیمیکل کا بھی پتا چلا لیا گیا ہے جو کینسر کے خلیات کو مائع شاکل میں تبدیل کرنے کا عمل شروع کرتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اس کیمیکل کو کنٹرول کرکے کینسر زدہ خلیات کے پھیلنے کے عمل کو روکا جاسکتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...