شاہ محمود قریشی کی شجاعت ،پرویزالٰہی سے ملاقات،عمران خان کا پےغام پہنچاےا

شاہ محمود قریشی کی شجاعت ،پرویزالٰہی سے ملاقات،عمران خان کا پےغام پہنچاےا

  



لاہور (جنرل رپورٹر/نمائندہ خصوصی) پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم سینیٹر چودھری شجاعت حسین اور سینئر مرکزی رہنما و سابق نائب وزیراعظم چودھری پرویزالٰہی سے پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی ہدایت پر وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے ان کی رہائش گاہ پر بات چیت کی اور پارٹی سربراہ کا پیغام بھی پہنچایا۔ شاہ محمود قریشی نے بعد ازاں مشترکہ پریس کانفرنس میں 2013ءکے انتخابات میں زبردست دھاندلی کا تفصیل سے ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں جماعتوں کی سوچ مشترک ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کا تبادلہ خیال کامیاب، مثبت اور حوصلہ افزا ہے، پاکستان مسلم لیگ کی قیادت سے ذہنی مطابقت اور بہت سے نکات پر ہم آہنگی ہے، ہم آئینی حدود میں آگے بڑھیں گے۔ چودھری شجاعت حسین نے اس موقع پر کہا کہ ہم پر غیر آئینی چیزیں سامنے لانے اور جمہوریت ڈی ریل کرنے کا پراپیگنڈہ کرنے والے بتائیں کہ جمہوریت ہے کہاں؟ یہ جمہوریت ہے کہ 15 افراد کے قتل پر ایف آئی آر درج ہوئی اور اب تک نہ کوئی گرفتاری کی گئی جبکہ ایک قتل پر کتنے ہی لوگ پکڑے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بات چیت سے پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری کو آگاہ کیا جائے گا۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ شاہ محمود قریشی سے سانحہ ماڈل ٹاﺅن، اے پی سی سمیت بہت سے امور پر بات چیت ہوئی، جمہوریت موجودہ حکمرانوں کا نام ہے جو ڈی ریل ہو رہے ہیں۔ ملاقات میں مسلم لیگی رہنما طارق بشیر چیمہ، چودھری ظہیر الدین خان اور محمد بشارت راجہ بھی موجود تھے۔ چودھری شجاعت حسین نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ اس وقت ملک میں پراپیگنڈہ زیادہ کیا جا رہا ہے جبکہ حقیقت اس کے برعکس ہے، ملک میں جمہوریت نام کی کوئی چیز نہیں ہے اگر ہوتی تو سانحہ ماڈل ٹاﺅن نہ ہوتا۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہاکہ ملاقات میں سانحہ ماڈل ٹاﺅن اور اے پی سی کے حوالے سے بھی تفصیلی گفتگو کی گئی ہے، حکمرانوں کو چاہئے کہ وہ اپنا نام جمہوریت رکھ لیں اور ہر ضلع میں 15,15 بندے مار دیں، نہ ان کے خلاف کوئی ایف آئی آر درج ہو گی نہ کسی کی دادرسی کیونکہ جو بھی اس ظلم کے خلاف اٹھے گا اسے جمہوریت کو ڈی ریل کرنے والا کہا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت نہیں بلکہ یہ حکمران جن کا نام جمہوریت ہے ڈی ریل ہو رہے ہیں، آنے والے وقت میں حالات کے مطابق تمام آپشن پر غور کریں گے اس وقت کسی جماعت سے بیک ڈور رابطے نہیں کیے جا رہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ اور پاکستان تحریک انصاف دونوں کی نظریاتی سوچ ایک ہے کہ کوئی غیر آئینی کام نہیں کرنا، حکومت نہیں جمہوریت کو ڈیل ریل ہونے سے روکنا ہے، تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ ایک پیج پر ہیں، اپنی پارٹی کا نقطہ نظر چودھری صاحبان کے آگے پیش کر دیا ہے اور چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی ہدایت پر ان کا پیغام لے کر یہاں چودھری صاحبان کی رہائش گاہ پر آیا ہوں، دنوں جماعتوں میں بہت سے نکات پر ذہنی ہم آہنگی اور مطابقت پائی جاتی ہے، اس وقت ملکی سیاسی صورتحال تیزی سے تبدیل ہو رہی ہے تین نکات پر دونوں جماعتوں کی سوچ ایک جیسی ہے کہ 2013ءکے انتخابات میں دھاندلی ہوئی، الیکشن کمیشن اپنا مثبت رول ادا نہیں کر سکا اور اپنا حق حاصل کرنے کیلئے آئینی و قانونی طریقے سے احتجاج کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ 2013ءکے الیکشن میں دھاندلی کے خلاف کہیں بھی داد رسی نہیں ہوئی، ن لیگ نے سب سے بڑا ڈاکہ عوام کے حق پر ڈالا ہے اس لیے عوام کو بحرانوں سے نکالنے کیلئے عمران خان نے 14 اگست کو لانگ مارچ کی کال دی ہے، اس لانگ مارچ میں سیاسی جماعتیں سول سوسائٹی اور عام شہری شرکت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں جمہوریت کو ڈی ریل کرنے والا کہا جا رہا ہے جبکہ ہمارا مقصد جمہوریت کو مضبوط و مستحکم کرنا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...