مسلم لڑکیوں کے سکول کو برطانوی حکومت کی جانب سے مرد اساتذہ بھرتی کر نے کا حکم

مسلم لڑکیوں کے سکول کو برطانوی حکومت کی جانب سے مرد اساتذہ بھرتی کر نے کا حکم
مسلم لڑکیوں کے سکول کو برطانوی حکومت کی جانب سے مرد اساتذہ بھرتی کر نے کا حکم

  



بریڈ فورڈ (نیوز ڈیسک) برطانیہ میں تعلیمی معیار کا جائزہ لینے والے ادارے نے مسلمان لڑکیوں کے ایک کالج میں صرف خواتین اساتذہ رکھنے کی وجہ سے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے حکم دیا ہے کہ اس کالج میں خواتین کے ساتھ مرد اساتذہ بھی رکھے جائیں۔ برطانوی حکومت کا ادارہ آف سٹیڈ سکولوں میں تعلیمی معیار برقرار رکھنے کا ذمہ دار ہے۔ اس ادارے کے افسران نے بریڈ فورڈ میں واقعہ فیور شام کالج پر چھاپہ مارا اور کالج میں خواتین اساتذہ، اسلامی طرز زندگی کی تعلیم اور موسیقی کی تربیت فراہم نہ کرنے پر سخت تنقید کی، اس کالج میں 664 مسلم طالبات زیر تعلیم ہیں اور یہ کالج اسلامی اقدار کی تعلیم اورغیر مخلوط طرز تعلیم کی وجہ سے مسلمانوں میں بہت مقبول ہے۔ اس کالج کی سٹاف کی بھرتی کی پالیسی پر پہلے بھی اعتراضات کئے گئے ہیں اور وزارت تعلیم اس سلسلے میں ایک انویسٹی گیشن بھی کررہی ہے۔ واضح رہے کہ اس کالج کا شمار بہترین تعلیمی اداروں میں ہوتا ہے اور اس کی تعلیمی کارکردگی قابل رشک رہی ہے۔ حال ہی میں دہشت گردی کے خلاف کام کرنے والے ایک حکومتی ادارے نے بھی اپنے جائزے میں کالج کو بہترین اقدار کا حامل قرار دیا، لیکن محض اس وجہ سے کہ یہ ادارہ طالبات میں اسلامی شعور اور اقدار کو فروغ دیتا ہے اور صرف خواتین اساتذہ کو طالبات کی تعلیم و تربیت کی ذمہ داریاں دینا ہے، برطانوی حکومت اس کی دشمن ہوگئی ہے اور سختی سے حکم دے دیا گیا ہے کہ نہ صرف مرد اساتذہ رکھے جائیں بلکہ ایڈمنسٹریشن سٹاف بھی مرد بھرتی کئے جائیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...