ڈاکٹروں نے مریض کے جسم سے وزنی ترین رسولی نکال لی

ڈاکٹروں نے مریض کے جسم سے وزنی ترین رسولی نکال لی
ڈاکٹروں نے مریض کے جسم سے وزنی ترین رسولی نکال لی

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین میں ڈاکٹرز نے ایک شہری کی ٹانگ کے ساتھ بننے والی دنیا کی سب سے بڑی رسولی (110کلو گرام) کو آپریشن کرکے الگ کر دیا۔ شنگھائی صوبہ سے تعلق رکھنے والے 37 سالہ یانگ جیابن کی پیدائش کے وقت دائیں ٹانگ پر سیارہ رنگ کا ایک غیرمعمولی نشان موجود تھا اور جب وہ 9 سال کی عمر کو پہنچا تو یہ نشان واضح ہو چکا تھا۔ 12سال کی عمر میں یہ رسولی بڑھتی ہوئی ایک مٹھی جتنی ہوئی تو سرجری کے ذریعے اسے ختم کروا دیا گیا، تاہم کچھ عرصہ بعد وہ پھر سے بڑھنے لگی۔ حال ہی میں یانگ جیابن نے بیجنگ میں اپنا چیک اپ کرایا تو معلوم ہوا کہ رسولی کا وزن اب 110کلوگرام یعنی 17پتھریوں سے بھی زیادہ ہے۔ دنیا کی سب سے بڑی رسولی کا آپریشن کرنے والے ڈاکٹر چن منلیانگ کا کہنا ہے کہ یانگ نیوروفائبرومیٹوسس نامی بیماری کا شکار تھے اور جنیاتی بدنظمی کے باعث یانگ کی عمومی نشوونما اور جسمانی خلیے متاثر ہوئے۔ نیوروفائبرومیٹوسس کے مریض ہم نے پہلے بھی دیکھے ہیں لیکن ہم نے اس سے بڑی رسولی زندگی بھر نہیں دیکھی۔ اس ضمن میں یانگ کا کہنا ہے کہ آپریشن سے قبل اس رسولی کے باعث وہ سارا دن بیڈ پر بیٹھ یا لیٹ کر گزارتا تھا، کیوں کہ وہ کھڑا نہیں ہو سکتا تھا۔ 1.2میٹر کی رسولی کے باعث ہسپتال میں بھی مجھے دو بیڈ دیئے گئے کیوں کہ یہ میرے جسم سے دو سے تین گنا بڑی تھی۔ رسولی کے خاتمے کے لئے کئے جانے والے آپریشن میں 9 سرجنز نے حصہ لیا اور یہ آپریشن 16گھنٹے تک چلا۔ آپریشن کے دوران مریض کو 5ہزار ملی لیٹر خون لگایا گیا، جو ایک بالغ انسان میں موجود خون سے بھی زیادہ ہے۔ یانگ کو رواں ماہ کے آخر تک ہسپتال سے ڈسچارج کرکے گھر بھجوا دیا جائے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس