ہائی کورٹ :بجلی بلوں پر گیس انفراسٹرکچر سرچارج کے خلاف درخواست پر حکومت سے جواب طلب

ہائی کورٹ :بجلی بلوں پر گیس انفراسٹرکچر سرچارج کے خلاف درخواست پر حکومت سے ...
ہائی کورٹ :بجلی بلوں پر گیس انفراسٹرکچر سرچارج کے خلاف درخواست پر حکومت سے جواب طلب

  


لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائی کورٹ نے بجلی کے بلوں پر گیس انفراسٹرکچر سرچارج نافذ کرنے کے خلاف درخواست پر نیپرا سمیت فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔مسٹرجسٹس اعجازا لاحسن نے کیس کی سماعت شروع کی تود رخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ نیپرا خود مختار ادارے کی بجائے حکومتی ادارے کا کردار ادا کر ر ہاہے اور عوامی مفاد کی بجائے حکومتی پالیسیوں کے مطابق 11ارب روپے کا نیا ٹیکس گیس ڈویلپمنٹ سرچارج کے نام پر بجلی کے بلوں پر عائد کر دیا۔درخواست میں کہا گیا کہ یہ سرچارج پاور سپلائی کمپنیوں سے وصول کیا جانا تھا مگر حکومتی ملی بھگت سے پاور سپلائی کمپنیوں سے سرچارج کی مد میں رقم وصول کرنے کی بجائے اربوں روپے ٹیکس براہ راست عوام پر منتقل کر دیا گیا جس کے بعد عدالت سرچارج کالعدم قرار دے۔ عدالت نے سماعت کے بعد نوٹس جاری کرتے ہوئے نیپرا سمیت فریقین سے 14جولائی کو جواب طلب کر لیاہے۔

مزید : لاہور