معصوم بچیوں کو بداخلاقی کا نشانہ بنانے والا ملزم گرفتار

معصوم بچیوں کو بداخلاقی کا نشانہ بنانے والا ملزم گرفتار
معصوم بچیوں کو بداخلاقی کا نشانہ بنانے والا ملزم گرفتار

  


 لاہور(کرائم سیل) سی آئی اے پولیس نے سات سے گیارہ سال کی عمر کی معصوم بچیوں کو ورغلا کر اپنے ساتھ لے جا کر مختلف ویران مقامات پر انہیں بد اخلاقی کا نشانہ بنانے والے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے ۔ ملزم اب تک نواں کوٹ ، لوئر مال ،فیکٹری ایریا، کاہنہ سمیت شہر کے مختلف علاقوں میں 15 سے زائد معصوم بچیوں سے بداخلاقی کر چکا ہے ۔ یہ بات ایس پی سی آئی اے محمد عمر ورک نے گذشتہ روز اپنے دفتر میں پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتائی ۔تفصیلات بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایک بچی کے ساتھ بداخلاقی کے کیس میں پولیس نے مینار پاکستان کی گراؤنڈ میں راتیں گزارنے والے مشکوک نوجوان ہارون کو شامل تفتیش کیا تو ا س نے بتایا کہ وہ گلی محلوں میں گھومتا پھرتا اور جو کمسن بچی اکیلی نظر آتی اسے کہتا کہ آؤ تمہارے ابو نے تمہارے لئے کچھ چیزیں بھیجی ہیں وہ لے لو، راستے میں بچیوں کو جوس ، سلانٹی اور چپس وغیرہ لے کر دیتا اور انہیں بہلا پھسلا کر ویگن ،بس یا رکشہ میں بٹھا کر ویران یا غیر آباد کوارٹروں میں لے جاتا اور زبردستی بداخلاقی کا نشانہ بناتا تھا۔محمد عمر ورک نے بتایا کہ پولیس نے ملزم کے انکشافات کی تصدیق کے لئے DNA اور پولی گرافک ٹیسٹ بھی کروائے ہیں جن کی رپورٹس فرانزک سائنس لیبارٹری سے موصول ہو چکی ہیں اور رپورٹس کے مطابق ملزم ہارون کی لوئر مال ، فیکٹری ایریا ، کاہنہ اور نواں کوٹ سمیت مختلف علاقوں کی بچیوں سے بد اخلاقی ثابت ہوچکی ہے ۔میڈیا کی موجودگی میں اپنے گھناؤنے جرائم کا اعتراف کرتے ہوئے ملزم ہارون نے بتایا کہ وہ لوئر مال ، فیکٹری ایریا، نواں کوٹ اور کاہنہ سمیت شہر کے مختلف علاقوں کی رہائشی 7 سے 11 سال کی عمر تک کی 15 معصوم بچیوں کو اپنی درندگی کا نشانہ بنا چکا ہے

مزید : علاقائی