12کروڑ کی سڑک 14کروڑ کا ناچ گانا

12کروڑ کی سڑک 14کروڑ کا ناچ گانا
 12کروڑ کی سڑک 14کروڑ کا ناچ گانا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نیب کی جانب سے سپریم کورٹ میں اپنی کارکردگی کے ضمن میں جمع کروائی جانے والی رپورٹ کے مطابق وزیر اعظم نواز شریف اور وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے رائے ونڈ میں ایک سڑک پر بارہ کروڑ روپے خرچ کئے ہیں جس کی تحقیق جاری ہے جبکہ دوسری جانب ڈی جے بٹ نے انکشاف کیا ہے کہ دھرنے کے دوران عمران خان نے چودہ کروڑ ناچ گانے میں اڑا دیئے ....آپ بتائیے کون سی کرپشن بڑی ہے کیونکہ اگر وزیرا عظم کی جانب سے بنائی جانے والی سڑک سے عام لوگ مستعفید ہوتے ہیں تو عمران خان کے ناچ گانے سے بھی تو پوری قوم چار مہینے تک محظوظ ہوتی رہی ہے !


اب سوال یہ ہے کہ آیا عوام ایسی باتوں کو خاطر میں لاتے ہیں ؟....تو اس کا جواب یہ ہے کہ بالکل عوام ایسی باتوں کو خاطر میں لاتے ہیں تبھی تو 2013کے عام اور 2015کے کنٹونمنٹ بورڈ کے انتخابات میں عوام نے پاکستان تحریک انصاف کو وہ پذیرائی نہیں بخشی ہے جس کا خواب عمران خان شوکت خانم ہسپتال میں بستر علالت پر لیٹے دیکھ رہے تھے!


ایسا نہیں ہے کہ عوام بڑے مقاصد کے حصول میں چھوٹے موٹے اخراجات کو خاطر میں نہیں لایا کرتے لیکن سوال یہ ہے عمران خان کے دھرنے کا مقصد کیا تھا جہاں پر لگ بھگ 14کروڑ ناچ گانے پر خرچ کردیا گیا۔ جہانگیر ترین کہتے ہیں دھرنے پر مجموعی اخراجات 70 کروڑ کے لگ بھگ اٹھے جس کے ایک ایک پیسے کا حساب موجود ہے۔ہماری ناقص رائے میں عمران خان نے یہ کارنامہ سرانجام دے کر عالمی ریکارڈ قائم کردیا ہے ، اب ان کا نام گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں ضرور درج ہونا چاہئے۔ عوام نے اس عظیم مقصد کو اس لئے لفٹ نہیں کروائی ہے کہ ان کو راسخ یقین تھا کہ 31اگست کی رات سے لے کر 16دسمبر تک عمران خان سوائے کسی امپائر کی انگلی کے اٹھنے کے انتظار کے سوا اور کچھ نہ کر رہے تھے۔


گزشتہ دنوں عمران خان نے لاہور میں کہا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف اندرونی خلفشار کا شکار ہے ۔ ہمیں پہلے تو یہ بات سمجھ نہ آرہی تھی لیکن ڈی جے بٹ کی جانب سے چھ کروڑ کی بقایا ادائیگی کا قضیہ اٹھایا گیا تو سمجھ میں آگیا کہ عمران خان درست کہہ رہے تھے ۔ ایک رات پہلے ڈی جے بٹ نے ایک ٹی وی چینل پر اس حوالے سے انٹرویو دیتے ہوئے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی کا ذمہ دار پاکستان تحریک انصاف لاہور کے صدر علیم خان کو ٹھہرایا اور دوران گفتگو عمران خان اور جہانگیر ترین کو کلین چٹ دے دی۔ ان کی باتیں سنتے ہوئے لگ رہا تھا کہ معاملہ ان کی بقایا ادائیگی سے بڑھ کر ہے ، پارٹی کے اندر کوئی ایسا ضرور ہے جو علیم خان کے خلاف ہے اور اس مقصد کو حاصل کرنے کے لئے اس نے ڈی جے بٹ کو استعمال کیا ہے ۔ وگرنہ علیم خان نے کون سا ڈی جے بٹ کو اپنے بیٹے کے ولیمے میں میوزک بجانے کے لئے بلایا تھا کہ وہ چھ کروڑ کی رقم کی ادائیگی کریں۔


اسی سے ایک اور بات بھی عیاں ہوتی ہے کہ عمران خان بنیادی طور پر ایک کنگلے شخص ہیں اور وہ پارٹی معاملات سے لے کر اپنے رہن سہن اور سفری اخراجات کے لئے پارٹی کے موٹے مالدار لیڈران پر تکیہ کئے ہوئے ہیں ۔ مثال کے طور پر وہ اپنے سفر کے لئے جہانگیر ترین کا جہاز استعمال کرتے ہیں تو اب ڈی جے بٹ نے جب کروڑوں کا حساب کرکے بقایا جات کی پرچی انہیں تھمائی تو انہوں نے اسے علیم خان کی طرف روانہ کردیا۔


دیکھا جائے تو عمران خان ایک مرتبہ پھر یو ٹرن لیتے نظر آرہے ہیں۔ وہ صاف شفاف سیاست کے داعی تھے لیکن پارٹی کے اللوں تللوں کی تفصیلات سامنے آنے سے پتہ چلتا ہے کہ حقیقت میں اس کے برعکس ہیں۔ اسی طرح وہ مریم نواز شریف کے سیاست میں ایکٹو ہونے کے سخت خلاف تھے اور بڑھ بڑھ کر باتیں کرتے تھے لیکن اب ریحام خان کہیں رکشے کی طرح خیبر پختونخوا حکومت کا جہاز جھوٹتی ہیں تو کہیں سیاسی سرگرمیاں کرتی نظر آتی ہیں اور جب عمران خان سے پوچھا جاتا ہے کہ یہ سب کیا ہورہا ہے تو وہ بتاتے ہیں کہ ریحام خان پاکستان کی شہری ہے اور اسے ان تمام سرگرمیوں کا حق حاصل ہے ۔


ہمارے خیال میں ڈی جے بٹ کو چاہئے کہ اگر ان کے بقایا جات کی ادائیگی میں مزید تاخیر ہوتی ہے تو وہ ایک عدد درخواست جسٹس ریٹائرڈ وجیہہ الدین کی عدالت میں ڈال دیں تاکہ وہ عمران خان کو پاکستان تحریک انصاف سے بے دخل کردیں۔


ہوتے ہوتے ترے رازوں کی خبر ہوتی ہے


رفتہ رفتہ تیری دنیا کا پتہ چلتا ہے !

مزید :

کالم -