قرضے معاف کرانیوالے بڑے نام جلد سامنے لاﺅں گا: شہباز شریف

قرضے معاف کرانیوالے بڑے نام جلد سامنے لاﺅں گا: شہباز شریف
قرضے معاف کرانیوالے بڑے نام جلد سامنے لاﺅں گا: شہباز شریف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ میں پیش کی گئی نیب کی فہرست میں جن سیاستدانوں کے نام سامنے آئے ہیں ان میں شریف خاندان نے پہل کرکے اپنی صفائی میں حقائق میڈیا کے سامنے پیش کردئیے ہیں۔ وزیراعلیٰ شہاز شریف نے یہاں تک کہہ دیا کہا گر اس حوالے سے کوئی الزام ہے تو وہ قانون کے کٹہرے میں کھڑے ہونے کیلئے بھی تیار ہیں۔ شہباز شریف نے اپنی پریس کانفرنس میں دستاویزی ثبوتوں کے ساتھ انتہائی مدلل انداز میں حقائق پیش کئے۔ آغاز میں انہوں نے کہا میں آج وزیراعلیٰ کی حیثیت سے نہیں بلکہ شریف خاندان کے نمائندے کی حیثیت سے مخاطب ہوں۔ میڈیا کے نمائندوں نے نیب کے کردار کے حوالے سے متعدد سوالات کئے اور کہا کہ یہ قابل اعتراض نہیں کہ نیب سیاستدانوں کی کردار کشی کررہا ہے اور سیٹلڈ کیسوں کو عدالت میں پیش کررہا ہے جس پر وزیراعلیٰ نے کہا کہ آج صرف اتفاق فاﺅنڈری کے قرضوں پر بات کروں گا، نیب کے کردار کے حوالے سے بہت جلد مناسب وقت پر بات ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے قرضے معاف کرانے والوں کا ذکر کرتے ہوئے ”امیر اور ترین“ کابار بار تذکرہ کیا جس پر صحافی بھی زیر لب مسکراتے رہے۔ شہباز شریف نے کہا کہ وہ عنقریب بڑے بڑے نام میڈیا کے سامنے لائیں گے جنہوں نے قومی بینکوں سے قرضے معاف کروائے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے سابق صدر آصف زرداری کے بارے میں ترش الفاظ یں بات کی تھی اس لئے الفاظ واپس لئے تھے۔ وزیراعلیٰ نے پریس کانفرنس کے دوران اتفاق فاﺅنڈری کے قرضوں، مارک اپ، کاسٹ آف فنڈ اور دیگر چارجز کی مد میں ادائیگیوں کی دستاویزات کے ساتھ بینکوں کی جانب سے جاری کلیئرنس سرٹیفکیٹس بھی میڈیا کو دکھائے۔ نیب کے بارے میں سوال پر انہوں نے کہا کہ بات چل نکلی ہے تو بہت دور تک جائے گی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ احتساب منصفانہ اور بے لاگ ہونا چاہیے۔ غریب کے قرض کا معاملہ آئے تو بینک اسے الٹا کر دیتے ہیں جبکہ ”امیر اور ترین“ کا کچھ نہیں ہوتا۔ انہوں نے یہ شعر بھی پڑھا:
مٹی کی محبت میں ہم آشفتہ سروں نے
وہ قرض اتارے ہیں کہ واجب بھی نہیں تھے

مزید :

لاہور -