مختلف حکمرانوں نے کتنے قرضے معاف کروائے؟ تہلکہ خیز انکشافات

مختلف حکمرانوں نے کتنے قرضے معاف کروائے؟ تہلکہ خیز انکشافات
مختلف حکمرانوں نے کتنے قرضے معاف کروائے؟ تہلکہ خیز انکشافات

  


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) معروف صحافی رﺅف کلاسرا نے انکشاف کیا ہے کہ سیاسی ادوار میں سب سے زیادہ بینکوں کو لوٹا گیا ہے اور معروف سیاستدانوں کی جانب سے اربوں روپے کے قرضے معاف کرائے گئے اور پھر انتخابات میں بھی حصہ لیا گیا جبکہ زرداری، نواز شریف، شہباز شریف اور قائم علی شاہ وزراءکو بچاتے ہیں۔ سابق وزیراعظم شوکت عزیز نے عرب شہزادے کا 40 ارب روپے کا قرضہ معاف کرا کر ”ریکارڈ“ قائم کیا۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام ”خبر سے خبر تک“ میں گفتگو کرتے ہوئے رﺅف کلاسرا نے کہا کہ سیاستدانوں نے زیادہ تر نیشنل بینک سے قرضے معاف کرائے اور بعض سیاستدانوں نے اپنے من پسند افراد کو نیشنل بینک کے عہدے دیئے تاکہ وہ باآسانی اربوں روپے کے قرضے معاف کرا سکیں جبکہ زرداری نے فرنٹ مین پکڑے جانے پر اینٹ سے اینٹ بجانے کی دھمکیاں دیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بینظیر بھٹو شہید کے 2 ادوار میں 7 ارب روپے معاف ہوئے جبکہ 2007ءکے بعد زرداری دور میں 125 ارب روپے کے قرضے معاف کرائے گئے۔ 2008ءکے بعد جمہوری ادوار میں150 ارب روپے کے قرضے معاف ہوئے اور نواز شریف کے 2 ادوار میں بھی 22 ارب روپے کے قرضے معاف کرائے گئے۔ جنرل مشرف دور میں 59 ارب روپے کے قرضے معاف ہوئے اور شوکت عزیز نے کاروباریوں کو بنک لوٹنے کی چھٹی دی۔

سابق سپیکر قومی اسمبلی فہمیدہ نے 84 کروڑ روپے معاف کرائے۔ گیلانی خاندان نے قرضہ معاف کرایا اور یوسف رضا گیلانی نے ملتانی خواجہ دوستوں کے 40 کروڑ روپے کے قرضے بھی معاف کرائے۔ پیپلز پارٹی کے سینیٹر اسلام شیخ نے 15 کروڑ روپے کا قرضہ معاف کرایا۔ انہوں نے کہا کہ لغاریوں نے بھی نیشنل بینک سے 30 کروڑ روپے معاف کرائے جبکہ جعفر خان لغاری، سیف اللہ فیملی، جتوئی فیملی سمیت پانچ جرنیلوں نے بھی قرضے معاف کرائے۔ کراچی کے ایک شہری شیخ ساجد نے 12 ارب روپے کا خطیر قرضہ بھی معاف کرایا۔

پرویز مشرف کے دورحکومت میں 59 ارب روپے کے قرضے معاف کرائے گئے جبکہ شوکت عزیز نے کاروباریوں کو بینک لوٹنے کی کھلی چھٹی دینے کیساتھ ساتھ پاکستان کی تاریخ میں سب سے بڑا فارن لون معاف کرایا۔ انہوں نے عرب شہزادے کا 40 ارب روپے کا قرضہ معاف کرایا اور اسے چھپانے کیلئے قومی خزانے سے 8 ارب روپے یو بی ایل بنک کو دیئے اور شوکت عزیز کی کھلی چھٹی کے باعث کراچی لاہور، ملتان کے کاروباری بنک لوٹنے میں فائدے میں رہے اور اس دوران خواتین نے بھی بینکوں سے 24 ارب روپے کے قرضے معاف کرائے۔

رﺅف کلاسرا کا کہنا تھا کہ سب نے دیکھا کہ رانا مشہود نے پیسے پکڑے لیکن شہباز شریف نے انہیں وزیر بنا دیا ۔ رانا مشہود کی ویڈیو منظر عام پر آئی لیکن کوئی تحقیق ہوئی نہ گرفتاری۔ اسی طرح وزیر قانون رانا ثناءاللہ کے خلاف ایف آئی آر درج ہوئی لیکن یہاں بھی کوئی گرفتار نہیں کی گئی۔ وفاق میں کئی سکینڈلز منظر عام پر آنے کے باوجود مقدمات درج نہیں کئے گئے۔

مزید : اسلام آباد