سخت ہدایات کے باوجو د ملتان شہر میں خطرناک عمارتوں کے مکینوں کو بچانے کیلئے اقدامات ندارد، کاغذی کارروائیاں جاری

سخت ہدایات کے باوجو د ملتان شہر میں خطرناک عمارتوں کے مکینوں کو بچانے کیلئے ...

  

ملتان (خبر نگار) پنجاب حکومت کی طرف سے سخت ہدایات کے باوجود ملتان شہر میں خطرناک عمارتوں کے مکینوں کو بچانے کیلئے اقدامات نہ کیے جا سکے۔ ضلعی حکومت، ٹاؤنز اور محکمہ (بقیہ نمبر46صفحہ12پر )

لوکل گورنمنٹ ملتان صرف کاغذی کارروائیوں تک محدود ہو کر رہ گئے۔ جبکہ خطرناک عمارتوں کے مکینوں کو رہائشی دینے کیلئے فلیٹس کی تعمیر کا ضلعی حکومت کو خواب بھی شرمندہ تعبیر نہ ہو سکا۔ اور حالیہ مون سون سیزن کے دوران خطرناک عمارتوں کے رہائشیوں کے لئے خطرات منڈلانے لگے اور ہزاروں مکینوں کی زندگیاں داؤ پر لگ گئیں گذشتہ سال مون سون سیزن کے دوران شہر کے مختلف علاقوں خصوصاً اندرون شہر میں خطرناک عمارتیں گرنے، قیمتی جانیں ضائع ہوگئی تھیں۔ جس پر سابق ضلعی انتظامیہ کی طرف سے خطرناک عمارتوں کے مکینوں کو رہائشی فلیٹس دینے کا منصوبہ آیا تھا۔ سابق ڈی سی او ملتان زاہد سلیم گوندل کے تبادلے کے بعد فلیٹس کا خواب دھرا کا دھرا رہ گیا ہے۔ جبکہ پنجاب حکومت کی طرف سے امسال خطرناک اور بوسیدہ عمارتوں کے مسئلے کو حل کرنے کیلئے ضلعی حکومتوں اور ڈویژنل ڈائریکٹرز لوکل گورنمنٹ کو سخت ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ مگر ماسوائے کاغذی کارروائیوں اور زبانی دعوؤں کے عملی اقدامات نہیں اٹھائے گئے ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -