مودی حکومت نے کشمیریوں کے قتل عام کا کھلا لائسنس دے رکھا،پاکستانی حکمران قاتل اور ظالم بھارت سے دوستی اور تجارت کی باتیں کرتے ہیں:سینیٹر سراج الحق

مودی حکومت نے کشمیریوں کے قتل عام کا کھلا لائسنس دے رکھا،پاکستانی حکمران ...
مودی حکومت نے کشمیریوں کے قتل عام کا کھلا لائسنس دے رکھا،پاکستانی حکمران قاتل اور ظالم بھارت سے دوستی اور تجارت کی باتیں کرتے ہیں:سینیٹر سراج الحق

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ مودی حکومت نے حق خود ارادیت کے لیے سوشل میڈیا کے استعمال پر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو کشمیری نوجوانوں کے قتل عام کا کھلا لائسنس دے رکھاہے،پاکستانی حکمران کشمیریوں کے قاتل اور ظالم بھارت سے دوستی اور تجارت کی باتیں کرنا چاہتے ہیں حالانکہ ان کا فرض ہے کہ وہ کشمیری عوام کی پشتیبانی کریں۔ بھارتی فوج کے ہاتھوں عید کے دنوں میں کشمیری نوجوانوں کی شہادت سے ثابت ہوتاہے کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام ہر لمحہ بھارتی ظلم و تشدد کی چکی میں پس رہے ہیں، پاکستانی عوام کے دل کشمیریوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں اور وہ ان کی جدوجہد آزادی کی پر زور حمایت کرتے ہیں۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید کئے گئے حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان مظفروانی اور ممتاز سماجی کارکن عبدالستار ایدھی کی منصورہ میں مشترکہ غائبانہ نماز جنازہ کے موقع پر خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق کا کہنا تھا کہ پہلے برہان مظفر وانی کو فرضی جھڑپ میں شہید کیا گیا اور بعدازاں ان کے جنازے پر فائرنگ کر کے 8 لوگوں کو شہید اور درجنوں کو زخمی کر دیا گیاجس کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں،پاکستانی عوام کے دل کشمیریوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں اور وہ ان کی جدوجہد آزادی کی پر زور حمایت کرتے ہیں،کشمیری عوام بھارت سے آزادی حاصل کر کے دم لیں گے ۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے علاوہ خود ہندوستان میں بھی ذاکر نائک جیسے پرامن مبلغ دین کے لیے زمین تنگ کی جارہی ہے اور ان کا تعلق دہشتگردی سے جوڑا جارہاہے،ذاکر نائک اور ان کے چینل کو بند کرنے کی کوشش بابری مسجد کی شہادت کی طرح ہندوستان کے کروڑوں مسلمانوں پر حملہ تصور کیا جائے گا۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ عبدالستار ایدھی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ حکومت بے گھر لوگوں کو چھت ، بیماروں کو مفت علاج اور تعلیم مہیا کرے اور ایدھی کے نام پر ایک یونیورسٹی قائم کی جائے جس میں انسانیت کی خدمت کے لیے مفت تعلیم دی جائے اور حکومت ان کی خدمات پر ان کیلئے عالمی نوبل پرائز کا مطالبہ کرے۔

مزید :

قومی -