کچے علاقے میں پولیس مقابلہ، 2اشتہاری انجام کو پہنچ گئے

کچے علاقے میں پولیس مقابلہ، 2اشتہاری انجام کو پہنچ گئے

قصبہ گجرات،خان گڑھ،دائرہ دین پناہ،چوک مکول،علی پور (نامہ نگارنمائندہ پاکستان)ہفتہ کے روز علی الصبح تقریبا 3بجے تھانہ سٹی علی پور کی حدود میں 6ڈاکوؤں کی موٹر سائیکل ڈکیتی کی اطلاع ملی جس پرتھانہ سٹی علی پور پولیس نے موقع پر پہنچ کر ڈاکووں کا تعاقب شروع کر دیا۔مسلح ڈاکو فائرنگ کرتے ہوئے کچے کے علاقے کی طرف دریائے سندھ کی سمت فرار ہونے کی کوشش کرتے رہے۔ایس ڈی پی او علیپور میاں یوسف ہارون بھی بروقت پہنچ گئے۔ ڈی پی او مظفرگڑھ اویس احمد ملک نے ساری صورتحال خود مانیٹر کرنا شروع کردی اور کنٹرول کے ذریعے خود احکامات دیتے رہے اور مزید نفری ایلیٹ فورس، ریورائن پولیس اور بھاری نفری بھی موقع پر پہنچادی۔ڈاکو سندھ کے قریب تھانہ خیرپور سادات کی حدود کچے کے علاقہ پہنچ گئے۔ ڈاکوؤں نے اپنی فرار کے تمام راستے بند دیکھ کر پولیس پر فائرنگ شروع کر دی ،پولیس نے بھی ڈاکوؤں کی فائرنگ کا بھرپور جواب دیا۔ پولیس مقابلے میں 2 ڈاکو اپنے ہی ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک ہو گئے اور باقی نامعلوم ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے ۔ ہلاک ملزمان کی شناخت انصری جاکھا اور شہزاد سندیلہ کے نام سے ہوئی۔یہ ڈاکومظفرگڑھ پولیس کو 50 سے زائد سنگین وارداتوں، قتل، اغوا، پولیس مقابلے، اغوا برائے تاوان، ڈکیتی، راہزنی جیسی 50 سے زائد وارداتوں میں مطلوب تھے۔ڈکیت شہزاد سندیلہ آخری ملزم تھا جنہوں نے پولیس جوان کنسٹیبل ساجد چانڈیہ اور PQR عابد کو شہید کیا تھا۔ اسی طرح پولیس ملازمین کو شہید کرنے والے تینوں ناسور کیفرکردار تک پہنچ گئے۔ ضلع مظفرگڑھ کی عوام پولیس کو خراج تحسین پیش کیا اور ڈی پی او مظفرگڑھ نے پوری پولیس ٹیم کیلئے نقد 5 لاکھ نقد انعام ،تعریفی اسناد اور 10لاکھ کے مزید انعام کی سفارش آئی جی پنجاب کو بھجوائی جائیں گی۔شہزاد سندیلہ قصبہ گجرات کے ساتھ بستی کشانی والہ کا رہنے والہ تھا جس کا والد ڈاکخانہ میں چپڑاسی ہے ۔اس کی وجہ سے اس کے خاندان والے بہت پریشان تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر