این اے 119سے جیپ کے نشان پر انتخابات میں حصہ لینے والے امید وار سید افتخار عباس جعفری کے بارے میں لوگوں نے ایسی بات کہہ دی کہ آپ بھی اپنا سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے

09 جولائی 2018 (00:11)

مرید کے (انتخابی کاررواں رپورٹ) قومی اسمبلی کے حلقے 119 میں چھ امیدوار ایسے ہیں جو کہ نہ کوئی انتخابی مہم چلا رہے ہیں اور نہ ہی ان کے حلقہ انتخاب میں انہیں کوئی جانتا ہے۔ تاہم الیکشن کمیشن کی انتخابی فہرست میں ان کے نام بمعہ انتخابی نشان درج ہیں اور بیلٹ پیپرز پر بھی شائع کئے جائیں گے۔ اس حلقے کے تحت آنے والی صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 135 صورت حال زیادہ مختلف نہیں اور یہاں بھی انجانے امیدوار میدان میں ہیں۔ این اے 119 کے صفدر شیراز ، جن کا انتخابی نشان بندوق اور سید افتخار عباس جعفری، جن کا انتخابی نشان جیپ ہے، انہیں حلقے کے ووٹرز نے آج تک مہم چلاتے ہوئے نہیں دیکھا۔ اسی طرح 135 سے چودھری لیاقت پاکستان فریڈم موومنٹ کے منظور علی شاہ آزاد امیدوار تحسین رضا اور آل پاکستان مسلم لیگ کے عبدالخالق امیدوار ہونے کے باوجود انتخابی مہم میں سرگرم نہیں ہے۔ ان کے حوالے سے بعض ووٹرز کا کہنا ہے کہ دو تین امیدوار تو ایسے ہیں جن کے خلاف مقدمات درج ہیں، اور انہوں نے چھتری کے طور پر گرفتاری کے خوف سے دو چار بینرز اور پوسٹرز چھپوا کر اپنے آپ کو امیدوار بنا رکھا ہے تاکہ سماج دشمن عناصر کے خلاف چلائی جانے والی مہم میں انہیں گرفتار نہ کرلیا جائے۔ کئی امیدوار ایسے ہیں جن کے خلاف سنگین نوعیت کے مقدمات درج ہیں۔

 

مزیدخبریں