شالیمار ریکارڈنگ و براڈکاسٹنگ کمپنی کے معاہدے کی منسوخی

شالیمار ریکارڈنگ و براڈکاسٹنگ کمپنی کے معاہدے کی منسوخی

اسلام آباد (اے پی پی)وزارت اطلاعات، قومی تاریخ و ادبی ورثہ حکومت پاکستان کے تحت کام کرنیوالے خودمختار ادارے شالیمار ریکارڈنگ و براڈکاسٹنگ کمپنی کے ترجمان نے میڈیا کے ایک سیکشن میں آنیوالی ان رپورٹس پر افسوس کا اظہار کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سپورٹس سٹار انٹرنیشنل کے اے ٹی وی میں کام کرنے والے ملازمین ایس آر بی سی اور ایس ایس آئی کے درمیان معاہدے کی منسوخی سے بیروزگار ہو گئے ہیں۔ اتوار کو ترجمان کی طرف سے جاری کی گئی وضاحت میں کہا گیا ہے کہ اصل صورتحال یہ ہے کہ ایس آر بی سی اور ایس ایس آئی کے درمیان معاہدہ ہوا تھا جس کے تحت ایس ایس آئی کی ذمہ داری تھی کہ وہ باقاعدگی سے اور ماہانہ بنیادوں پر ایس آر بی سی کو کمرشل ائیرٹائم کیلئے ادائیگی کرے تاہم ایس ایس آئی نے مناسب وقت ملنے کے باوجود معاہدے کی ذمہ داریوں سے انحراف کیا اور اپنے وعدے سے پھر گئے اور اس کے بقایا جات 58کروڑ سے تجاوز کر گئے جس میں ایس آر بی سی نے کنٹریکٹ ختم کر دیا اور ایس ایس آئی کے خلاف حکومتی واجبات کی وصولی کے لئے قانونی کارروائی شروع کر دی۔ترجمان نے کہا کہ ایس ایس آئی اپنے وعدے کی تکمیل میں ناکامی اور عدالتوں سے مسترد ہونے کے بعد قبل ازیں اے ٹی وی کے لئے کام کرنے کے لئے ملازمین کو اپنے مقاصد کیلئے استعمال کر رہی ہے۔ترجمان نے توقع ظاہر کی کہ ایس ایس آئی اس کے ملازمین اور عوام کو گمراہ کرنے سے باز رہے اور اپنے مذموم اور تجارتی مفادات کے لئے ملازمین کو استعمال کرنے سے گریز کرے۔ ترجمان نے کہا کہ ایس آر بی سی نے ایس ایس آئی سے اپنے بقایا جات کی وصولی کے لئے قانونی کارروائی شروع کر رہی ہے اور معاہدے کی ذمہ داریوں اور مملکت کے قانون کے مطابق کوئی اور بھی ریلیف ہوئی تو وہ حاصل کرے گی۔

شالیمار ریکارڈنگ

مزید : علاقائی