ایم کیو ایم کے سابق رہنما سلیم شہزاد لندن میں انتقال کر گئے

ایم کیو ایم کے سابق رہنما سلیم شہزاد لندن میں انتقال کر گئے

لندن(این این آئی ،مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ کی بنیاد رکھنے والے رہنماؤں میں شامل سلیم شہزاد لندن میں انتقال کر گئے۔ سلیم شہزاد گردے اور جگر کے سرطان میں مبتلا تھے جس کے علاج کیلئے وہ لندن کے ایک ہسپتال میں زیرعلاج تھے۔مرحوم نے سوگواران میں بیوہ اور 5 بیٹیوں کو چھوڑا ہے۔خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ ان کی تدفین دو روز بعد لندن میں ہی ہوگی۔سلیم شہزاد کے اہلخانہ کے مطابق وہ 2015 سے جگر اور گردے کے کینسر میں مبتلا تھے جنہیں چند روز قبل طبیعت بگڑنے پر مغربی لندن کے ایک ہسپتال میں علاج کیلئے لایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے 36 گھنٹے انتہائی اہم قرار دئیے تھے۔ سلیم شہزاد نے کراچی میں 1992 کے دوران ہونے والے آپریشن کے بعد خود ساختہ جلا وطنی اختیار کر لی تھی اور وہ 6 فروری 2017 کو دبئی سے کراچی پہنچے تھے تاہم انہیں ایئرپورٹ پر گرفتار کرکے اگلے روز جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا تھا۔بعد ازاں 2 جون 2017 میں کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت اور ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج شرقی نے سلیم شہزاد کے ریلیز آرڈر جاری کردئیے تھے۔2 دسمبر 2017 کو کراچی کی سٹی کورٹ میں پیشی کے بعد میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے سلیم شہزاد نے کہا کہ وہ نئی پارٹی کی بنیاد رکھنے جارہے ہیں اور ان کی پارٹی میں نہ چائنا کٹنگ والے ہوں گے ٗنہ ٹارگٹ کلر اور نہ ہی ڈرائی کلینر۔ان کے خلاف مجموعی طور پر 23 مقدمات درج تھے اور عدالتوں سے ضمانت پر ہونے کے ساتھ انہیں عدالت نے بیرون ملک جانے کی اجازت بھی دے رکھی تھی۔سلیم شہزاد نے 9 جنوری 2018 کو بنی گالا میں سربراہ پاکستان تحریک انصاف عمران خان سے ملاقات کی تھی انہوں نے اپنی جماعت بنانے کا بھی اعلان کر رکھا تھا۔

مزید : صفحہ آخر