ننگر ہار میں آپریشن :داعش کے 4، افغان طالبان کے 3اور امریکی فوجی سمیت 8ہلاک

ننگر ہار میں آپریشن :داعش کے 4، افغان طالبان کے 3اور امریکی فوجی سمیت 8ہلاک

کابل،بنوں (این این آ ئی)افغان صوبہ ننگر ہار میں فضائی و زمینی آ پریشن ، داعش کے چار جبکہ افغان طالبان کے تین جنگجوؤں مارے گئے ،جنوبی افغانستان میں ایک افغان سپاہی کی فائرنگ کے نتیجے میں ایک امریکی فوجی ہلاک ہو گیا۔ تفصیلات کے مطابق افغانستان کے صوبے ننگر ہار میں داعش کے ٹھکانوں پر امریکی طیاروں کی بمباری کے نتیجے میں چار جنگجوؤں کے مارے جانے کی اطلاعات ہیں ۔ذرائع کے مطابق اتوار کی شب امریکی فوجیوں نے فضائی آ پریشن عمل میں لاتے ہوئے صوبہ ننگر ار کے ضلع اچینی میں داعش کے کئی ٹھکانوں کو نشانہ بناتے ہوئے ان پر بمباری کی جس میں چار جنگجوؤ ں مارے گئے جبکہ چھوٹا بڑا اسلحہ جو ٹھکانوں میں پڑا تھا بھی بمباری کے نتیجے میں ضائع ہوگیا ہے سرکاری سطح پر فضائی آ پریشن کی تصدیق ہو گئی ہے تاہم اس حوالے سے داعش کی طرف سے تاحال کوئی بیان سامنے نہیں آ یا اسی طرح افغان سکیورٹی فورسز نے اسی حلقہ میں زمینی آ پریشن کرتے ہوئے تین طالبان جنگجوؤں کو مارنے کا دعویٰ کیا ہے ۔ دریں اثناجنوبی افغانستان میں ایک افغان سپاہی کی فائرنگ کے نتیجے میں ایک امریکی فوجی ہلاک جب کہ دو دیگر زخمی ہوگئے ،غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایک بیان میں افغانستان میں تعینات شمالی اوقیانوس کے عسکری اتحادی نیٹو نے کہا کہ جنوبی افغانستان میں ایک افغان سپاہی کی فائرنگ کے نتیجے میں ایک امریکی فوجی ہلاک جب کہ دو دیگر زخمی ہوگئے ۔نیٹو نے بتایا کہ دونوں زخمی فوجیوں کی صحت خطرے سے خالی بتائی جاتی ہے جنھیں طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے۔نیٹو نے بتایا ہے کہ معاملے کی تفتیش جاری ہے۔نیٹو کی قیادت والا رزلوٹ سپورٹ مشن جنوری 2015ء سے افغانستان میں تعینات ہے، جہاں وہ افغان سکیورٹی افواج کو تربیت، مشاورت اور اعانت فراہم کر رہا ہے۔سولہ ہزار پر مشتمل اس فوج میں 39 نیٹو ملکوں اور اتحادیوں کے فوجی شامل ہیں۔افغان حکام کا کہنا تھا کہ یہ ہولناک حملہ ارزگان صوبے کے ترین کوٹ کے فضائی اڈے پر ہوا، جو جنوبی صوبہ یارزگان کا دارالحکومت بھی ہے۔دوسری جانب طالبان نے اس حملے کی تحسین کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ با ضمیر فوجی کی فائرنگ سے کم سے کم چار قابض امریکی فوجی ہلاک اور زخمی ہوئے ۔

8 ہلاک

مزید : کراچی صفحہ اول