جمعہ کے دن فرشتے درود پڑھنے والوں کا سلام لیکر رسول اللہ ﷺ کی بارگاہ میں کہاں حاضر ہوتے ہیں اور سرکار دوجہاں ﷺ جواب میں اس پر کیا فرماتے ہیں؟ عاشقان رسول ﷺ کے لئے انتہائی ایمان افروز معلومات 

جمعہ کے دن فرشتے درود پڑھنے والوں کا سلام لیکر رسول اللہ ﷺ کی بارگاہ میں کہاں ...
جمعہ کے دن فرشتے درود پڑھنے والوں کا سلام لیکر رسول اللہ ﷺ کی بارگاہ میں کہاں حاضر ہوتے ہیں اور سرکار دوجہاں ﷺ جواب میں اس پر کیا فرماتے ہیں؟ عاشقان رسول ﷺ کے لئے انتہائی ایمان افروز معلومات 

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نظام الدولہ) اللہ کریم نے درود و سلام پڑھنے کی بے پناہ فضیلتیں ارشاد فرمائی ہیں۔یہ ایسا سہانااورمقدس عمل ہے کہ انسانوں کے ساتھ ساتھ فرشتے اور اللہ پاک بھی اپنے محبوب نبیﷺ پر درود بھیجتے ہیں۔احادیث میں بیان کیا گیا ہے کہ جب بھی کوئی مسلمان درود پڑھتا ہے تو فرشتے درود و سلام لیکر رسول خداﷺ کی بارگاہ میں پہنچتے اور اس بندے کا درود پیش کرتے ہیں ۔ اللہ کے پیارے نبیﷺ کی بارگاہ میں فرشتے کب اور کہاں درود لیکر پیش ہوتے ہیں اس بارے میں فتویٰ آن لائن میں عالم دین حافظ محمد اشتیاق الازہری نے ایک قاری کے سوال کے جواب میں وضاحت کرتے ہوئے بیان کیا ہے کہ اس میں کوئی شک و شبہ والی بات ہی نہیں کہ اللہ کے نبی ﷺ تصرف فرماتے اور درود پاک ﷺ سنتے ہیں ۔

حافظ محمد اشتیاق الازہری نے احادیث کی روشنی میں بیان کیا ہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ویسے ہی تصرف فرماتے ہیں جیسے پردہ فرمانے سے پہلے تھا۔ اس بارے احادیث موجود ہیں جن میں یہ ذکر ہے کہ درود و سلام آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر پیش بھی کیا جاتا ہے اور خود آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم براہ راست بھی سنتے ہیں۔ سنن ابن ماجہ اور سنن ابی داودمیں ہے کہ حضرت ابو درداء رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں ’’ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا جمعہ کے دن مجھ پر زیادہ سے زیادہ درود بھیجا کرو۔ یہ یوم مشہود (یعنی فرشتوں کی میری بارگاہ میں خصوصی حاضری کا دن) ہے۔ اس دن فرشتے (خصوصی طور پر کثرت سے میری بارگاہ) میں حاضر ہوتے ہیں ۔کوئی شخص جب بھی مجھ پر درود بھیجتا ہے اس کے فارغ ہونے تک اس کا درود مجھے پیش کر دیا جاتا ہے‘‘ حضرت ابو درداء رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ میں نے عرض کی’’ یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم آپ کے وصال کے بعد بھی ایسا ہو گا؟‘‘ آپﷺ نے فرمایا’’ ہاں وصال کے بعد بھی (اسی طرح پیش کیا جائے گا کیونکہ) اللہ تعالٰی نے زمین پر حرام کر دیا ہے کہ وہ انبیاء کرام کے جسموں کو کھائے۔ پس اللہ کا نبی زندہ ہوتا ہے اور اسے رزق بھی دیا جاتا ہے‘‘ 

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا ’’کوئی بھی شخص مجھ پر سلام بھیجتا ہے تو بے شک اللہ تعالٰی نے مجھ پر میری روح لوٹا دی ہوئی ہے۔ (اور میری توجہ اس کی طرف مبذول فرماتا ہے۔) یہاں تک کہ میں اس کے سلام کا جواب دیتا ہوں‘‘

درج بالا احادیث سے پتہ چلا کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنی قبر میں زندہ ہیں۔ اور جو بھی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود و سلام بھیجتا ہے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے تصرف سے خود بھی سنتے ہیں اور فرشتے بھی پیش کرتے ہیں۔پس ہر مسلمان کو چاہئے کہ جمعہ کے دن خاص طور پر درود پاک ﷺ کو اہتمام کے ساتھ پڑھا کرے ۔

مزید : روشن کرنیں