مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہیں،اقوام متحدہ

  مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہیں،اقوام متحدہ

  

اسلام آباد،جنیوا(صباح نیوز)اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی کونسل نے کشمیر پر 2019 کی رپورٹ جاری کی ہے جس میں بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں بے انتہا اضافہ پر شدید تشویش ظاہر کیا گیا ہے جبکہ پاکستان نے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق ہائی کمشنر کی مقبوضہ کشمیرسے متعلق دوسری رپورٹ کا خیرمقدم کیا ہے،رپورٹ کی تیاری میں مقبوضہ کشمیر کی تنظیم جموں کشمیر کولیشن سول سوسائٹی(جے کے سی سی ایس)نے اہم کردار ادا کیا۔رپورٹ کے مطابق بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں غیر قانونی حراست اور جبری ہتھکنڈے استعمال کرتی ہے، 2018 میں 160 لوگوں کو شہید اور 1253 کو نابینا کیا گیا، بھارتی حکومت کی جانب سے کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں بے انتہا اضافہ ہوا ہے جس پر شدید تشویش ہے،۔ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کے مطابق پاکستان نے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق ہائی کمشنر کی مقبوضہ کشمیرسے متعلق دوسری رپورٹ کا خیرمقدم کیا ہے جس میں کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے احترام پر زور دیا گیا ہے۔ترجمان دفترخارجہ کا اپنے بیان میں کہنا ہے کہ ہائی کمشنر کی مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کیلئے انکوائری کمیشن کے قیام کی سفارش کا خیر مقدم کرتے ہیں، رپورٹ میں پیلٹ گنز کے استعمال سمیت قابض افواج کی بربریت کا حوالہ دیا گیا۔ ترجمان دفترخارجہ نے یہ بھی کہا کہ مقبوضہ کشمیر اور آزاد کشمیر و گلگت بلتستان کے حالات میں کوئی مماثلت نہیں۔ترجمان دفترخارجہ کے مطابق مقبوضہ کشمیر دنیا میں سب سے زیادہ عسکری مداخلت والا خطہ ہے جب کہ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان غیر ملکی سیاحوں کیلئے کھلے ہیں، مسئلہ کشمیر کا واحد حل عوام کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق خود ارادیت دینا ہے۔

کشمیر رپورٹ

مزید :

صفحہ آخر -