ڈالر،سونا مہنگا،سٹاک مارکیٹ میں مندی،سرمایہ کاروں کے پونے 81ارب روپے ڈوب گئے

ڈالر،سونا مہنگا،سٹاک مارکیٹ میں مندی،سرمایہ کاروں کے پونے 81ارب روپے ڈوب گئے

  

کراچی (اکنامک رپورٹر)ملکی کرنسی مارکیٹوں میں ڈالرکے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے قدری کاتسلسل جاری،فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق پیرکوانٹربینک مارکیٹ میں روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قیمت خرید میں 88یسے اور قیمت فروخت میں 78پیسے کااضافہ ریکارڈ کیاگیا،جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید156.50روپے سے بڑھ کر 157.88 روپے اورقیمت فروخت157.00روپے سے بڑھ کر157.78روپے ہوگئی۔اوپن کرنسی مارکیٹ میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالرکی قیمت میں 50پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا،جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید156.00روپے سے بڑھ کر156.50روپے اورقیمت فروخت157.00روپے سے بڑھ کر157.50روپے ہوگئی۔دوسری طرف عالمی گولڈمارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت میں 5ڈالر کا اضافہ، جس کے نتیجے میں مقامی صرافہ مارکیٹوں میں بھی فی تولہ سونا650روپے مہنگاہوگیا۔آل کراچی صراف اینڈجیولرزایسوسی ایشن کے مطابق فی اونس سونے کی قیمت1400ڈالر سے بڑھ کر1405ڈالرہونے کے بعدکراچی،حیدرآباد، سکھر، ملتان، فیصل آباد، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے کی قیمت میں 650روپے اور10گرام سونے کی قیمت میں 558روپے کااضافہ ریکارڈ کیاگیا،جس کے نتیجے میں فی تولہ سونے کی قیمت78000روپے سے بڑھ کر78650روپے اوردس گرام سونے کی قیمت66872روپے سے بڑھ کر67430روپے ہوگئی۔پیرکو چاندی کی فی تولہ قیمت اوردس گرام قیمت میں استحکام رہا،جس کے نتیجے میں چاندی کی فی تولہ قیمت910.00روپے اوردس گرام چاندی کی قیمت780.17روپے پرمستحکم رہی۔

ڈالر،سونا

کراچی (اکنامک رپورٹر)پاکستان سٹاک ایکسچینج میں کاروباری ہفتے کے پہلے روز پیرکواتارچڑھاؤ کے بعد مندی رہی اور کے ایس ای100انڈیکس 34100،34000،33900اور33800کی نفسیاتی حدوں سے گرگیا،مندی کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کے 81ارب75کروڑ روپے سے زائدڈوب گئے،کاروباری حجم گذشتہ روزکی نسبت16.21فیصدزائد جبکہ77.45فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی بروکریج ہاؤسز سمیت دیگرانسٹی ٹیوشنزکی جانب سے توانائی، سیمنٹ، بینکنگ، فوڈ، کیمیکل سمیت دیگرمنافع بخش سیکٹرمیں خریداری کے بعد  پیرکوکاروبارکا آغازمثبت زون میں ہواٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای10034230پوائنٹس کی بلندسطح پر بھی دیکھا گیاتاہم مقامی کرنسی مارکیٹوں میں ڈالر کی قدر میں اضافے اور وفاقی بجٹ میں تحفظات کے باعث مقامی سرمایہ کار گروپ تذبذب کا شکار نظرآئے اور مارکیٹ میں خریداری سے گریز کیا، جس کے نتیجے میں تیزی کے اثرات زائل ہوگئے اور دوران ٹریڈنگ کے ایس ای100انڈیکس 33691پوائنٹس کی سطح پر دیکھا گیاتاہم غیرملکی سرمایہ کاروں کی جانب سے ایک بار پھرمارکیٹ میں سرمایہ کاری کی گئی جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس کی33700کی حد بحال ہوگئی تاہم اتارچڑھاؤ کا سلسلہ سارادن جاری رہا۔مارکیٹ کے اختتام کے ایس ای100انڈیکس447.34پوائنٹس کمی سے33742.68پوائنٹس پر بندہوا۔پیرکو مجموعی طور پر306کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا،جن میں سے49کمپنیوں کے حصص کے بھاؤمیں اضافہ،237کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں کمی جبکہ20کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔سرمایہ کاری مالیت میں 81ارب75کروڑ38لاکھ15ہزار442روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی،جس کے نتیجے میں سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت گھٹ کر68کھرب28ارب48کروڑ86لاکھ85ہزار384روپے ہوگئی۔

سٹاک مارکیٹ

مزید :

صفحہ آخر -