ٹیکسٹائل پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، بر آمدات کو اب بھی استثنی حاصل ہے : شبر زیدی

  ٹیکسٹائل پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، بر آمدات کو اب بھی استثنی حاصل ہے : ...

  

فیصل آباد(سپیشل رپورٹر،سٹی رپورٹر ) چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو شبر زیدی نے کہا ہے کہ ٹیکسٹائل پر کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، برآمدات کو پہلے بھی استثنیٰ تھا آج بھی ہے،کسی کا بینک اکا ونٹ بغیر وضاحت منجمد نہیں کیا جائے گا، سیلز ٹیکس رجسٹریشن سے متعلق بہت شکایات تھیں اسے آٹو میٹ کر دیا،سارا کام صرف وقتی طور پر چیزوں کو ٹھیک کرنا ہے ۔ چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ زیرو ریٹنگ کی مراعات پہلی مرتبہ ختم نہیں ہوئیں ۔ آج جو ٹیکسٹائل سیکٹر کی صورتحال ہے اس کے مدنظر فیصلہ کیا گیا، یہاں آنے کا مقصد ہے کہ زیرو ریٹنگ مراعات کے خاتمے پر بات کی جائے ۔ شبر زیدی کا کہنا تھا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کے مختلف سٹیک ہولڈرز سے بات چیت ہوئی، جو بھی بہتر حل نکلے گا اس کی طرف جائیں گے ۔ آگے بڑھنا ہے اور تمام وسائل بروئے کار لائیں گے ۔ ایف بی آر میں بڑے پیمانے پر تقرر و تبادلے کیے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کی شکایت ہے ایف بی آر کی جانب سے ہراساں کیا جاتا ہے، ایف بی آر والے کہتے ہیں ہم جائز ٹیکس کےلئے بات کرتے ہیں ۔ جو بھی ہراساں کرنے میں ملوث ہوگا اسے ادارے میں نہیں رہنا چاہئے، آہستہ آہستہ آٹو میشن پر جائیں گے، انسانی عمل دخل کم کریں گے ۔ آتے ہی کہا تھا کسی کا بینک اکا ونٹ بغیر وضاحت منجمد نہیں کیا جائے گا، سیلز ٹیکس رجسٹریشن سے متعلق بہت شکایات تھیں اسے آٹو میٹ کر دیا ۔ شبر زیدی کا کہنا تھا کہ فیصل آباد کے ابھی بھی چند کیسز زیر التوا ہیں ، پہلی والی ایمنسٹی سکیم کراچی اسلام آباد کی بنیاد پر تھی ۔ موجودہ ایمنسٹی سکیم کی پذیرائی ملک بھر میں ہوئی ہے ۔ کسی قسم کا نیا ٹیکس نہیں لگایا، لگایا ہے تو بتائیں ۔ یہ تاثر غلط ہے کہ کوئی نیا ٹیکس لگایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا کام صرف وقتی طور پر چیزوں کو ٹھیک کرنا ہے، بڑا آسان طریقہ تھا کہ سیلز ٹیکس ریٹ بڑھا دیا جاتا مگر ہم نے ایسا نہیں کیا، روپے کی قدر میں کمی کے باعث مہنگائی ہوئی ۔ روپے کی قدر میں کمی کی وجوہات گورنر اسٹیٹ بینک بتا سکتے ہیں ۔ پاکستان کو تاریخی جاری اور تجارتی خساروں کا سامنا ہے ۔ چیئرمین ایف بی آر کا کہنا تھا کہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ اور اسمگلنگ کے مسائل کو سنجیدگی سے حل کر رہے ہیں ، اس مسئلے کو حل نہ کیا گیا تو نقصان ہوگا ۔ مہنگائی کنٹرول کرنے کے لیے صنعتی اور روزگار میں اضافہ ضروری ہے ۔ چیئرمین ایف بی ;200;ر نے کہا کہ فیصل ;200;باد کے تین لاکھ 41ہزار صنعتی کنکشن ہیں جن میں سے صرف سولہ ہزار ٹیکس دے رہے ہیں ۔ ملک بھر میں کوئی بھی ٹیکس ریٹرن فائل کی بات نہیں کر رہا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے وژن کے مطابق لوگوں کو ہراساں نہیں کیا جائیگا ۔ چیئرمین ایف بی آر نے مویشی منڈی میں بکروں کی خریداری پر ٹیکس لگانے کی تردید کرتے ہوئے اسے افواہ قرار دیا ۔ صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے کہا ہے کہ قومی معےشت کے استحکام میں تاجر اور صنعتکاروں کے کلیدی کردار کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا یہی وجہ ہے کہ موجودہ حکومت ان کو درپیش مسائل کے حل کےلئے سنجیدہ ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے فیصل آباد چیمبر ;200;ف کامرس اینڈ انڈسٹری میں صنعتکاروں اور تاجروں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ صوبائی وزراء پبلک پراسیکوشن ‘ سماجی بہبود چوہدری ظہیرالدین ‘ محمد اجمل چیمہ ‘ چیئرمین فیڈرل بورڈ ;200;ف ریونیو سید شبر حسین زیدی ، ارکان اسمبلی میاں فرخ حبیب ‘ لطیف نذر ‘ شکیل شاہد ‘ خیال احمد کاسترو ‘ فردوس رائے کے علاوہ پی ٹی ;200;ئی رہنما چوہدری اشفاق احمد ‘صدر چیمبر ;200;ف کامرس سید ضیاء علمدار حسین ‘ چیئرمین فیڈک میاں کاشف اشفاق ‘ چیئرمین اپٹما حبیب احمد گجر ‘ ایکسپورٹ ‘پروسینگ ‘ سپننگ ‘ ویونگ ‘ پاور لومز ‘ یارن ‘ سائزنگ اور دیگر انڈسٹریز کے صدور ڈاکٹر خرم طارق ‘ حافظ احتشام جاوید ‘ نوید گلزار ‘ چوہدری عبدالحق ‘ وحید خالق رامے ‘ جواد اصغر ‘ شکیل انصاری بھی موجود تھے ۔ صوبائی وزیر صنعت نے صنعتکاروں و تاجروں کے بجٹ اور ٹیکسز سے پیدا ہونے والے مسائل دریافت کرتے ہوئے کہا کہ ان کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری طبقات کو زیادہ سے زیادہ سہولیات کی فراہمی کے لئے کوشاں ہیں تاکہ صنعت کا پہیہ چلتا رہے اور ملکی معیشت ترقی کرے ۔ انہوں نے کہا کہ تاجروں کی تجاویز کو مقدم رکھیں گے اور ان پر عملدر;200;مد بھی کیا جائے گا ۔

شبر زیدی;47;اسلم اقبال

مزید :

صفحہ اول -