سولر سے تعلیمی ادارے،دیہات روشن، مگر؟

سولر سے تعلیمی ادارے،دیہات روشن، مگر؟

پنجاب حکومت نے دور دراز کے علاقوں اور تعلیمی اداروں کو توانائی کی سہولت بہم پہنچانے کے لئے سولر انرجی پر انحصار اور اسے پھیلانے کا فیصلہ کر لیا۔ وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار نے ہدائت کی کہ جنوبی پنجاب کے دس ہزار آٹھ سو سکولوں کو اس سال دسمبر کے اختتام تک سولر انرجی کی سہولت مہیا کر دی جائے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اس پروگرام کے علاوہ یونیورسٹیوں اور دوسرے اداروں کو بھی مرحلہ وار سولر انرجی پر منتقل کیا جائے گا اور آغاز یونیورسٹی آف انجینئرنگ لاہور سے کیا جائے گا۔وزیراعلیٰ نے متعلقہ محکموں کو راجن پور اور ڈیرہ غازی خان جیسے اضلاع میں دور دراز کے دیہات کو سولر انرجی مہیا کرنے کے لئے فزیبلٹی تیار کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔یہ ایک بہتر اور اچھا فیصلہ ہے۔ سابق حکومتوں کے ادوار میں بھی اس پر کام کیا گیا تھا، حتیٰ کہ سو میگاواٹ والی سولر پارک بھی شروع کی گئی۔متعدد سڑکوں،سکولوں اور اداروں کو سولر انرجی مہیا کی گئی۔ آج بھی کئی دیہات کے سکول مستفید ہو رہے ہیں۔ اس سلسلے کے مفید کام کو عوام اور موسم کے لئے قابل عمل اور قابل قبول بنانے کے لئے متعدد مسائل و اسباب کو بھی پیش نظر رکھنا پڑے گا۔ اول تو ماحولیاتی تبدیلی ہے۔ سولر سے حدت بھی بڑھتی ہے۔ اس کے لئے سائے اور مزید شجر کاری کی ضرورت ہوتی ہے جو حدت کو نارمل کر دے، اس کے لئے یہ بھی لازم ہے کہ اس نظام کی مسلسل دیکھ بھال کا مناسب ہی نہیں مکمل نظام موجود ہو اور اسے چوروں سے بھی بچایا جائے۔ اگر یہ سب نہ ہوا تو اس نئے پروگرام کا بھی وہی حال ہو گا جو پہلوں کا ہو چکا، سابقہ دور میں جی ٹی روڈ کے متعدد شہروں اور قصبات کے درمیان سے گزرنے والے حصے کو روشن رکھنے کے لئے سولر سٹریٹ لائٹ لگائی گئی،اسی طرح لاہور میں علامہ اقبال روڈ اور وحدت روڈ کے ایک حصے کو روشن کیا گیا،دکھ کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ یہ سب ناکارہ ثابت ہوا جس کی وجہ دیکھ بھال کا نہ ہوناہے۔ متعدد پینل خراب ہو کر لائٹیں بجھ گئیں اور کئی بیٹریاں چوری کر لی گئیں، سولر جہاں مستقل روشنی کا ذریعہ اور بجلی پربوجھ کم کرتی ہے وہاں سستی بھی ہے کہ ایک بار لگا دینے کے بعد دیکھ بھال ہو تو کئی سال مفت روشنی فراہم ہوتی ہے۔وزیراعلیٰ کو خیال رکھنا ہو گا کہ ان کا یہ اعلان اور ہدائت یونہی نہ رہے نہ صرف بروقت نظام شروع ہو، بلکہ اس کی مستقل دیکھ بھال ہوتی رہے تاکہ قومی خزانے سے استعمال ہونے والی رقم کا بھی تحفظ ہو، حکومت کو چاہیے کہ سولر کا جو نظام پہلے لگایا گیا اس کی دیکھ بھال کا مناسب انتظام کرکے اسے بھی بحال کیا جائے اور جو نیا لگے اس کی حالت یہ نہ ہو۔

مزید : رائے /اداریہ