نجی ٹی وی چینلز کی بندش پر مولانا فضل الرحمان بھی میدان میں آگئے

نجی ٹی وی چینلز کی بندش پر مولانا فضل الرحمان بھی میدان میں آگئے
نجی ٹی وی چینلز کی بندش پر مولانا فضل الرحمان بھی میدان میں آگئے

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ نئے پاکستان میں میڈیا بھی آزاد نہیں ہے۔بعض نجی ٹی وی چینل کی بندش پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ سلیکٹڈ حکومت میں کوئی ادارہ خود مختار نہیں، نئے پاکستان میں میڈیا بھی آزاد نہیں ہے۔مولانا فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ سلیکٹڈ حکومت چاہتی ہے کہ ٹی وی چینلز حقائق سے عوام کو آگاہ نہ کریں لیکن ہم میڈیا پر پابندی کسی صورت برداشت نہیں کریں گے، سلیکٹڈ وزیراعظم چینلز کی بندش کا فیصلہ جلد از جلد واپس لیں۔یادرہے کہ گزشتہ شام سے کیپٹل ٹی وی کے مطابق پیمرا نے بغیر وجہ بتائے اور نوٹس کیے کیپیٹل ٹی وی کی نشریات غیر معینہ مدت تک بند کرا دیں ۔ادھر مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر سینئر صحافی نجم سیٹھی نے بتا یا کہ پیمرا کے حکم پر کیبل آپریٹرز نے 24نیوز کی نشریات ملک بھر میں بند کردی ہیں اور اسی طرح اب تک اور کیپٹل ٹی وی کی نشریات بھی بند کی گئی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ چینلوں کی بندش کی وجہ مریم نواز کی پریس کانفرنس اور جلسے کی کوریج ہے ۔دوسری جانب ٹوئٹر پر اب تک نیوز نے وزیراعظم عمران خان سے درخواست کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیمرا نے پاکستان بھر کی تمام بڑی کیبلز سے اب تک نیوز کو آف ائیر کروا دیا ہے ،ہم چاہتے ہیں کہ آپ اس معاملے کو حل کر یں ۔صحافتی تنظیم ایمر ا نے پیمرا کی جانب سے کیبل آپریٹرز سے زبردستی چینلز کی بندش کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ نئے پاکستان میں حق اور سچ کی آواز دبائی جانے لگی ،آزاد صحافت کا گلہ گھونٹ دیا گیا ہے ۔صحافتی تنظیم کا کہنا ہے کہ جمہوریت آزادی صحافت کے بغیر نا مکمل ہے ۔

مزید :

قومی -