باقاعدگی سے ورزش کرنے اور صحت بخش غذا کھانے کے باوجود کینسر کا شکار ہوجانے والے نوجوانوں کی حیران کن کہانی

باقاعدگی سے ورزش کرنے اور صحت بخش غذا کھانے کے باوجود کینسر کا شکار ہوجانے ...
باقاعدگی سے ورزش کرنے اور صحت بخش غذا کھانے کے باوجود کینسر کا شکار ہوجانے والے نوجوانوں کی حیران کن کہانی

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) باقاعدگی سے ورزش کرنے اور ہمیشہ صحت مندانہ خوراک کھانے والوں کے متعلق خیال کیا جاتا ہے کہ وہ خطرناک بیماریوں میں کم مبتلا ہوتے ہیں اور یہ بہت حد تک حقیقت بھی ہو سکتی ہے مگر اب ڈیلی میل نے اپنی ایک رپورٹ میں کچھ ایسے نوجوان لڑکے لڑکیوں کی کہانی بیان کی ہے جو باقاعدگی سے ورزش کرتے اور صحت بخش خوراک کھاتے رہے لیکن پھر بھی ’باﺅل کینسر‘(Bowel Cancer) جیسے موذی مرض کا شکار ہوگئے۔ نہ کبھی انہیں اپنے اس مرض کا شبہ ہوا اور نہ ہی ان کے ڈاکٹروں کو، چنانچہ ان میں سے اکثر میں بہت دیر سے کینسر کی تشخیص ہوئی۔ ان تمام 20لوگوں کی عمریں 26سے 42سال کے درمیان تھیں۔ ان میں 28سالہ بیتھ پرویس نامی لڑکی بھی شامل ہے جو برطانوی علاقے ایسیکس کی رہائشی ہے۔ اس کو باﺅل کینسر لاحق ہوئے دو سال ہو چکے تھے جب مرض کی تشخیص ہوئی۔بیتھ پرویس کا کہنا تھا کہ ”میرا لائف سٹائل ایسا صحت مندانہ تھا کہ میں نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ ایسا مرض مجھے لاحق ہو گا اور وہ بھی اتنی کم عمر میں۔ میں کبھی زندگی میں موٹاپے کا شکار نہیں ہوئی اور ہمیشہ متحرک زندگی گزاری۔ باقاعدگی سے ورزش کرتی رہی اورہمیشہ صحت بخش خوراک کھاتی رہی۔ “ بیتھ پرویس اور دیگر تمام نوجوانوں نے دیگر لوگوں کونصیحت کرتے ہوئے کہا کہ ”اگر آپ صحت مندانہ زندگی گزار رہے ہیں تو پھر بھی باﺅل کینسر اور دیگر ایسے امراض سے غافل نہ رہیں۔ یہ مت سمجھیں کہ آپ ورزش کر رہے ہیں اور اچھی خوراک لے رہے ہیں تو آپ کو یہ مرض لاحق نہیں ہوں گے۔ باقاعدگی سے اپنے ٹیسٹ کروائیں تاکہ مرض کی جلد تشخیص ہو سکے اور علاج ممکن ہو سکے۔“

مزید : تعلیم و صحت