’میں نے 15 لوگوں کے سامنے برہنہ سین شوٹ کرایا، ڈائریکٹر نے کہا بھی کہ سپیشل کاسٹیوم پہن لو لیکن میں نے انکار کردیا‘

’میں نے 15 لوگوں کے سامنے برہنہ سین شوٹ کرایا، ڈائریکٹر نے کہا بھی کہ سپیشل ...
’میں نے 15 لوگوں کے سامنے برہنہ سین شوٹ کرایا، ڈائریکٹر نے کہا بھی کہ سپیشل کاسٹیوم پہن لو لیکن میں نے انکار کردیا‘

  


چنائی (ڈیلی پاکستان آن لائن) جنوبی ہندوستان کی فلم انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی اداکارہ امالا پال نے انکشاف کیا ہے کہ انہوں نے اپنے نئی فلم کیلئے ایک برہنہ سین 15 لوگوں کی موجودگی میں شوٹ کرایا، ڈائریکٹر نے انہیں سپیشل کاسٹیوم پہننے کی تجویز بھی دی تھی تاہم انہوں نے خود ہی انکار کردیا تھا۔ امالا پال اپنی نئی فلم ’ ادائی‘ کی تشہیر میں مصروف ہیں جس کا 18 جون کو ٹیزر اور آج (منگل کو ) ٹریلر جاری کیا گیا ہے۔ اداکارہ نے اس فلم میں ایک برہنہ سین بھی عکسبند کرایا ہے جبکہ اسی سین کی تصویر سے فلم کا پوسٹر تخلیق کیا گیا ہے۔ امالا پال نے اپنے برہنہ سین کے حوالے سے بھارت کے معروف اخبار سے بات چیت کرتے ہوئے اس دوران پیش آنے والی مشکلات کے بارے میں بات کی ہے۔اداکارہ نے بتایا کہ وہ برہنہ سین کے باعث کافی پریشان تھیں، انہیں سب سے زیادہ پریشانی اس بات کی تھی کہ سیٹ پر کیا ہوگا، کون کون موجود ہوگا اور کیا وہاں سکیورٹی کے انتظام ہوں گے یا نہیں؟۔ ’میری پریشانی دیکھ کر فلم ادائی کے ڈائریکٹر رتنا کمار نے تجویز دی کہ سین کی شوٹنگ کے دوران سپیشل کاسٹیوم پہن لوں لیکن میں نے انکار کردیا اور کہا آپ کو فکر کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔‘ انہوں نے بتایا کہ ڈائریکٹر نے شوٹنگ کے دن صرف 15 لوگوں کو سیٹ پر موجود رکھا ، اگر انہیں اپنے سٹاف کے لوگوں پر اعتماد نہ ہوتا تو وہ یہ سین عکسبند نہ کراپاتیں۔ امالا نے انٹرویو کے دوران انکشاف کیاکہ وہ اس فلم سے پہلے اداکاری چھوڑنے کا سوچ رہی تھیں کیونکہ انہیں اچھی فلم ملنے کی امید نہیں تھی۔ ’مجھے جتنی بھی فلمیں مل رہی تھیں وہ سب جھوٹی لگتی تھیں، ان کی کہانی ریپ وکٹم اور اس کا انصاف پانے کیلئے جدوجہد اور پھر اس کے بدلے پر مبنی ہوتی تھیں اور مجھے ایسے کردار نبھانے نہیں تھے۔‘

مزید : تفریح