دوسالوں سے جیل میں پڑے قیدیوں کی سزاؤں میں تخفیف نہ دینے پر آئی جی جیلخانہ جات کو نوٹس

  دوسالوں سے جیل میں پڑے قیدیوں کی سزاؤں میں تخفیف نہ دینے پر آئی جی جیلخانہ ...

  

پشاور(نیوزرپورٹر) پشاورہائیکورٹ کے جسٹس اکرام اللہ اور جسٹس نعیم انور پرمشتمل دورکنی بنچ نے دو سال سے جیل میں پڑے قیدی کو سزاؤں میں تخفیف نہ دینے کے خلاف دائر رٹ پر آئی جی جیل خانہ جات کونوٹس جاری کردیاعدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے دانیال اسد چمکنی ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائر مقدر نامی قیدی کی رٹ کی سماعت کی جس میں انہوں نے موقف اختیار کیا ہے کہ چمکنی پولیس نے 2018میں اسے منشیات سمگل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا بعد میں جرم ثابت ہونے پر ملزم کو پانچ سال قید کی سزا سنائی گئی تاہم اس دوران جیل میں مختلف نوعیت کے مقدمات میں قیدیوں کو دی جانے والی مافیاں اس کو نہیں لگائی گئی اور یہ اسکے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے کیونکہ دیگر قیدیوں کو اسی نوعیت کے کیسز میں معافیاں دی گئی ہیں دانیال اسد چمکنی ایڈوکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ اس حوالے سے ضروری کارروائی ہونا باقی ہے کیونکہ درخواست گزار اپنی مدت قید پوری کرچکا ہے عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد آئی جی جیل خانہ جات کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کرلیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -