نئی حلقہ بندیاں،درخواست کی فوری سماعت کی استدعا مسترد

      نئی حلقہ بندیاں،درخواست کی فوری سماعت کی استدعا مسترد

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ نے ایم کیوایم پاکستان کی نئی حلقہ بندی کمیٹی میں ضلعی انتظامیہ ودیگرکوشامل کرنے کی درخواست کی فوری سماعت کی استدعا دوسری بارمسترد کردی ہے۔بدھ کو سندھ ہائیکورٹ میں نئی حلقہ بندی کمیٹی میں ضلعی انتظامیہ ودیگرکوشامل کرنے کے کیس کی سماعت ہوئی۔ ایم کیوایم پاکستان کی درخواست کی فوری سماعت کی استدعادوسری بارمسترد کردی گئی۔جسٹس خادم شیخ نے ریمارکس دئیے کہ حلقہ بندیوں کاعمل روکنے کاحکم نہیں دے سکتے۔عبیدالرحمان ایڈووکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ ایم کیوایم سیاسی جماعت ہے،نئی حلقہ بندیوں سے نقصان ہوگا۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ حلقہ بندیوں سے متعلق درخواست میں طویل بحث ہوسکتی ہے،تعطیلات میں درخواست کی سماعت ممکن نہیں ہے۔واضح رہے کہ ایم کیوایم رہنما عامر خان، کنور نوید جمیل اور مئیرکراچی وسیم اختر کی جانب سے درخواست دائر کی گئی ہے۔ایم کیوایم پاکستان نے الیکش کمیشن کے نوٹیفکیشن کو چیلنج کیا تھا۔الیکشن کمیشن نے اپنے نوٹی فکیشن میں حلقہ بندیوں کے لیے ڈپٹی کمشنر اسسٹنٹ کمشنر کو شامل کیا تھا۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ 2013 میں حلقہ بندیوں کا طریقہ طے ہوچکا ہے،الیکشن کمیشن کا حلقہ بندیوں کے لیے کمیٹی تشکیل دیناغیرقانونی ہے۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ جوحلقہ بندیاں ہوچکی ہیں،ان کی رپورٹ بھی تاحال پبلک نہیں کی گئی،حلقہ بندیوں سے متعلق کمیٹی بلدیاتی انتخابات میں بھی اثرانداز ہوگی۔ایم کیوایم پاکستان نے مطالبہ کیا کہ الیکشن کمیشن کا نوٹی فیکیشن کالعدم قرار دیا جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -