یو ایم ٹی کی طالبہ نے "دی ڈیانا ایوارڈ" جیت لیا

  یو ایم ٹی کی طالبہ نے "دی ڈیانا ایوارڈ" جیت لیا

  

لاہور (پ ر) یو نیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی (یو ایم ٹی) کی طالبہ نبیلہ عباس کو سماجی خدمات اور انسانی فلاح کیلیئے کی گئی کاوشوں پر " دی ڈیانا ایوارڈ " سے نوازہ گیاہے۔ نبیلہ عباس کو پاکستان کے دیہی علاقوں میں رہنے والی خواتین اور لڑکیوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے اور انکی زندگیوں میں مثبت تبدیلی لا کر انکو با اختیار بنانے میں خدمات کے حوالے سے منتخب کیا گیا۔ "ڈیانا ایوارڈ" ویلز کی شہزادی ڈیانا کی یاد میں قائم کیا گیا ہے۔ چیریٹی کے ذریعے دیے گئے اس ایوارڈ کو دونوں بیٹوں (ڈیوک آف کیمبرج اور سسیکس) کی حمایت حاصل ہے۔ نبیلہ ایک قابل طالبہ اور یو ایم ٹی کمیونٹی کی ممبر رہی ہے۔اس نے ایوی ایشن لٹریری فورم بھی تشکیل دیا جو کہ دیگر لڑکیوں کے اپنے خواب اور گولز پورا کرنے کیلیئے پلیٹ فارم مہیا کرتا ہے۔نبیلہ یو ایم ٹی سے اپنی ایوی ایشن کی ڈگری مکمل کرنے بعد پاکستان کے دیہی علاقوں میں لڑکیوں کی نمائندگی کیلیئے عالمی پلیٹ فارم استعمال کر رہی ہے۔نبیلہ عباس نے اپنے آبائی علاقے چوٹی ذریں میں خواتین کی تعلیمی اصلاحات اور پیش رفت پر بھی کام کیاہے۔ نبیلہ نے گفتگو کرتے بتایا کہ وہ اپنے والد کے سکول کو بھی چلارہی ہیں جہاں بچوں خاص طور پر لڑکیوں کو مفت تعلیم دی جا رہی ہے۔خیالات کا اظہار کرتے اسکا یہ بھی کہنا تھا کہ کامیابی کے اس سفر میں اس کے والدین اور یو ایم ٹی نے اہم کردار ادا کیا ہے۔

صدر یو ایم ٹی ابراہیم حسن مراد نے نبیلہ عباس کو مبارکباد پیش کی اور اس سنگ میل کو حاصل کرنے میں اس کی کوشوں کو خو ب سراہا۔انکا کہنا تھا کہ نبیلہ جیسے قابل طلباء نہ صرف یو ایم ٹی بلکہ پوری قوم کے لیئے قابل فخر ہیں جنہوں نے " دی ڈیانا ایوارڈ" جیت کر بین الاقوامی سطح پر پوری قوم کا سر فخر سے بلند کیا ہے۔

خیالات کا اظہار کرتے ابراہیم مراد کا مزید کہنا تھا کہ یو ایم ٹی بین الاقوامی معیار کے پیشہ ورانہ افراد و لیڈرز پیدا کر رہی ہے جو انسانی اور سماجی فلاح و ترقی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔

مزید :

کامرس -