ہیڈ محمد والا،کاغذات چیک کرنیکی آڑ میں ٹریفک اہلکاروں کی لوٹ مار

ہیڈ محمد والا،کاغذات چیک کرنیکی آڑ میں ٹریفک اہلکاروں کی لوٹ مار

  

لنگر سرائے‘چوک پرمٹ (نمائندہ پاکستان) اے ایس آئی ٹریفک پولیس نیاز نے دیگر کانسٹیبلان کے ہمراہ ھیڈ محمد والا پر ناکہ لگا کر کاغذات چیکنگ کی آڑ میں لوٹ مار کا سلسلہ(بقیہ نمبر50صفحہ7پر)

شروع کر رکھا ہے۔ کوئی سواری ایسی نہیں گزرتی۔جس سے ہزار پانچ سو روپے نذرانہ وصول نہ کیا جاتا ہو۔ مسافر سواریوں، خواتین اور بزرگوں کو کئی کئی گھنٹے لائن میں کھڑا کرکے ذلیل کیا جاتا ہے۔ گاڑیوں کے کاغذات مکمل ہونے کے باوجود ہتک آمیز رویہ معمول ہے۔ متعدد مرتبہ سواری مالکان اور کرپٹ اے ایس آئی کے درمیان تصادم کی صورت حال پیدا ہو چکی ہے۔ ناکہ بلاناغہ صبح سات بجے سے شام چھے بجے تک لگایا جاتا ہے۔ آصف خان،رانا عمران،ملک اشرف،سیٹھ اسحاق،محسن ایاز،وقار تجرا،جمعہ خان، ملک یوسف، سیٹھ اقبال، رانا کاشف، رانا حامد، فیاض تجرا،ملک مدنی،قیصر خان،اقبال خان، کاشف خان اور احسن قادر نے ھیڈ محمد والا اے ایس ٹریفک پولیس نیاز کی کرپشن کا سلسلہ روکنے کیلیے ھیڈ محمد والا پر ناکہ سسٹم ختم کرانے، کرپشن کے الزامات پر ملازمت سے برخواست کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے ناکہ لگا کر لوٹ مار کرنے پر شدید احتجاج کرتے ہو? کہا کہ حکومت کرپشن کے خاتمے میں ناکام ہو چکی ہے۔ رشوت ستانی کاسلسلہ رکنے کے بجا? بڑھ گیاہے۔ جس پر ہعر شخص تشویش اور اضطراب میں مبتلا ہے۔ ٹریفک پولیس کی لوٹ مار ختم کرنے کیلیے فوری اقدام عمل میں نہ لایاگیا تو بھرپور احتجاج کریں گے۔

لوٹ مار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -