نشتر،انتظامیہ کی غفلت سے سرکاری ادویات کا سٹاک خراب ہونیکا خدشہ

  نشتر،انتظامیہ کی غفلت سے سرکاری ادویات کا سٹاک خراب ہونیکا خدشہ

  

ملتان (وقا ئع نگار ) نشتر ہسپتال کی انتظامیہ کی غفلت سے کروڑوں روپے مالیت کی سرکاری ادویات کا سٹاک خراب ہونیکا خدشہ پڑ گیا ہے باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے نشتر ہسپتال کے نرسنگ ہاسٹل اور کالج میں کے کیفے ٹیریا اور چھت پر کروڑوں روپے مالیت کی (بقیہ نمبر33صفحہ6پر)

سرکاری ادویات موجود ہیں۔جہاں شدید گرمی اور حبس موجود ہوتی ہے۔حالانکہ طبی ماہرین کے مطابق ادویات کو سٹور کرنے کیلئے خاص ڈگری کا ٹمپریچر موقع پر موجود ہونا چاہیے۔جس کے ذریعے ادویات کی خراب ہونے بچ سکتی ہیں۔ذرائع کے مطابق سرکاری ادویات خراب ھونے سے حکومت پنجاب کو کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑ سکتا ہے۔وا۔نشتر انتظامیہ نے لاپرواہی اور غفلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے قیمتی سرکاری ادویات سٹور میں رکھنے کی بجائے نرسنگ ہاسٹل اور کالج میں رکھوا دیا گیا ھے. ذرائع کے مزید مطابق انٹرنیشنل سٹینڈرڈ کے مطابق ادویات کو زیادہ سے زیادہ 22 ڈگری سینٹی گریڈ پر رکھنا ضروری ہے۔جبکہ مذکورہ ہسپتال کی انتظامیہ نرسنگ ہاسٹل کی رہداریوں میں سرکاری ادویات کا ذخیرہ 47 سینٹی گریڈ کے ٹیمریچر پر رکھا ہوا ہے۔ اس کے باوجود ائے دن سرکاری ادویات سے بھرے ٹرک اور کینٹینر ادویات کو سٹور کرنے کیلے نشتر ہسپتال کے نرسنگ ہاسٹل اور نرسنگ کالج میں لاے جاتے ہیں۔جہاں ادویات کا اسٹاک رکھنے کے وقت پردہ دار خواتین (نرسنگ سٹوڈنٹس) کو مشکلات کا سامنا کیا ہے۔ڈاکٹروں۔نرسوں و دیگر ملازمین نے اعلی حکام سے مذکورہ صورت حال پر فوری نوٹس لینے کا، مطالبہ کیا ہے۔

خدشہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -