بارش کے بعد متاثرہ علاقوں میں جلداز جلد بجلی کی بحالی ممکن بنائی، کے الیکٹرک

بارش کے بعد متاثرہ علاقوں میں جلداز جلد بجلی کی بحالی ممکن بنائی، کے الیکٹرک

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) شہر میں ہونے والی بارش کے نتیجے میں کے الیکٹرک کی جانب سے اپنی رسپانس ٹیموں کو جلداز جلد بجلی بحالی کے لئے متحرک کیا گیا. اس دوران کمپنی کی سینئر مینجمنٹ, سی ای او کی سربراہی میں بارش سے متعلقہ بحالی کے کاموں کی براہ راست نگرانی کرتی رہی۔کے الیکٹرک کی مسلسل کاوشوں کے نتیجے میں ملیر, گلشن معمار, سعودآباد, گلشن اقبال, اورنگی ٹاؤن اور سرجانی سمیت ایف بی ایریا صدر اور بہادرآباد سوسائٹی میں گزشتہ روز کی بارش کے بعد بجلی بحال کی گئی۔ اس کے علاوہ کے الیکٹرک کی جانب سے نارتھ ناظم آباد، گارڈن, لانڈھی, ڈیفنس, کلفٹن, شاہ فیصل ٹاؤن میں بھی بجلی بحال کردی گئی تھی۔ترجمان کے مطابق شہر کے کچھ مقامات پر کے الیکٹرک کی تنصیبات پر درختوں کے گرنے یا پانی کھڑا ہونے کے باعث بجلی بحالی میں مشکلات کا سامنا رہا. جن علاقوں میں پانی جمع ہونے کی اطلاعات تھیں وہاں عوام کا تحفظ یقینی بنانے کیلیے بجلی کی فراہمی عارضی طور پر معطل بھی کی گئی۔ واضح رہے کہ کے الیکٹرک کی جانب سے سسٹم کو بہتر بنانے لیے خاطر خواہ اقدامات کئے گئے ہیں. ترجمان کے الیکٹرک کے مطابق ارتھنگ اور گراؤنڈنگ کے علاوہ ایچ ٹی اور ایل ٹی پولز کی جیو ٹیگنگ بھی کی گئی ہے۔ انسانی جانوں کا تحفظ ادارے کی اولین ترجیح ہے, تاہم یہ متعلقہ اداروں کی بروقت کارروائی کے بغیر ممکن نہیں۔ رین ایمرجنسی کے محکموں سے کے الیکٹرک نے گزارش کی ہے کہ بارش کے بعد بجلی کی تنصیبات کے گرد کھڑے پانی کی فوری نکاسی ممکن بنائیں۔اس کے علاوہ ادارہ نے شہریوں سے درخواست کی ہے کہ اس موسم میں وہ ٹوٹے ہوئے تاروں, کھمبوں اور بجلی کی تنصیبات سے مناسب فاصلہ برقرار رکھیں. غیرقانونی اور غیرمحفوظ طریقوں سے بجلی کی تنصیبات استعمال کرنیوالے ادارے یا افراد عوامی مفاد میں اس خطرناک عمل سے باز رہیں۔ بجلی کا غیرقانونی حصول جیسے کنڈے, غیرمتعلقہ تاریں یا پانی کی گیلی موٹر جان لیوا ثابت ہوسکتی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -