عزیربلوچ سے متعلق جے آئی ٹی کے مندرجات پرتوجہ کی ضرورت ہے،مرادسعید

عزیربلوچ سے متعلق جے آئی ٹی کے مندرجات پرتوجہ کی ضرورت ہے،مرادسعید
عزیربلوچ سے متعلق جے آئی ٹی کے مندرجات پرتوجہ کی ضرورت ہے،مرادسعید

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاق وزی مواصلات مراد سعید نے کہاہے کہ عزیربلوچ سے متعلق جے آئی ٹی کے مندرجات پرتوجہ کی ضرورت ہے،عزیربلوچ کا 164کابیان لیکرآیاہوں جس پرکسی کواعتراض نہیں،ایک جے آئی ٹی میں ہے قبضہ کیاگیا،دوسری میں ہے کس کے کہنے پرکیا؟،ایک دستاویزسامنے لایاہوں جس پرسندھ حکومت اورنہ علی زیدی کااعتراض ہے،جے آئی ٹی سندھ حکومت کی ہویاعلی زیدی کی،دونوں میں الزامات درست ہیں۔

وفاقی وزیر نے کہاکہ جے آئی ٹی میں بھتہ خوری،اغوابرائے تاوان ودیگرجرائم کاذکرہے،ایوان میں اگرسوال پوچھاجائے توجواب دیناان کافرض ہے،عزیربلوچ کااعترافی بیان لےکرآیاہوں جس پرکسی کواعتراض نہیں۔

مراد سعید نے کہاکہ سپیکرصاحب !عزیربلوچ کے اعترافی بیان سے 5پوائنٹس اٹھاناچاہتاہوں،اس کے بعد 2 گھنٹے اپوزیشن کوسننے کوتیارہوں،جے آئی ٹی کی گہرائی کوکسی نے نہیں دیکھاکہ اتنے قتل کیوں ہوئے؟،عزیربلوچ کہتاہے میں نے قتل کرناتھاجس کیلئے 3 پولیس موبائل جمع کیں،عزیربلوچ کہتاہے قتل کیااوران کے سرسے فٹبال کھیلا،ویڈیوبنائی،عزیربلوچ نے اعترافی بیان میں کہاکہ پیپلزپارٹی قیادت کی سرپرستی حاصل تھی۔

وفاقی وزیر نے کہاکہ بیان میں ہے کہ 2008 میں رحمان ڈکیٹ کی ہلاکت کے بعدگینگ کی سربراہی کی،عزیربلوچ نے پولیس مقابلے، اغوابرائے تاوان،تھانوں پرحملوں کااعتراف کیا، بھتہ کی رقم آصف زرداری کی بہن فریال تالپورکوملتی تھی،عزیر بلوچ کہتاہے بلاول ہاؤس کے اطراف لوگوں کوہراساں کیا،40گھرخالی کرائے، شاہدہ رحمانی نے مرادسعید کی تقریر کے دوران کورم پوائنٹ آؤٹ کردیا،جس پر قومی اسمبلی کا اجلاس ملتوی کردیاگیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -