اپنی سزا ختم ہونے کے بعد آدمی نے جیل میں 5 سال اوپر گزار دئیے، نہ حکام کو اسے رہا کرنا یاد رہا نہ اُسے خود

اپنی سزا ختم ہونے کے بعد آدمی نے جیل میں 5 سال اوپر گزار دئیے، نہ حکام کو اسے ...
اپنی سزا ختم ہونے کے بعد آدمی نے جیل میں 5 سال اوپر گزار دئیے، نہ حکام کو اسے رہا کرنا یاد رہا نہ اُسے خود

  

ایپیا(مانیٹرنگ ڈیسک)یہاں قسمت کے مارے قیدی جیل میں ایک ایک دن گن کر گزارتے ہیں اور اپنی رہائی کے دن کا بے صبری سے انتظار کرتے ہیں لیکن یہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے کہ سیموا میں ایک قیدی اپنی قید کی مدت سے 5سال زائد جیل میں گزار گیا۔ اس کی قید ختم ہونے پر اسے رہا کرنا نہ حکام کو یاد رہا اور نہ ہی اس قیدی کو یاد رہا کہ اس کی قید کی مدت ختم ہو چکی ہے۔

انڈیا ٹائمز کے مطابق اس 45سالہ قیدی کا نام سیو ایگافیلی ہے جس کی قید کی مدت دسمبر 2015ءمیں ختم ہو چکی ہے لیکن وہ اب تک جیل میں پڑا تھا۔ سیوایگا فیلی کو ایک اور معاملے میں گزشتہ دنوں عدالت میں پیش کیا گیا جہاں اس کا ریکارڈ دیکھنے کے بعد جج کو اس غلطی کا احساس ہوا اور اس نے حکام کی توجہ اس طرف دلائی کہ قیدی 5سال زیادہ قید کاٹ چکا ہے۔ سیموا آبزرور سے بات کرتے ہوئے سیوایگا نے یہ حیران کن بات کہہ ڈالی کہ ”مجھے کبھی بتایا ہی نہیں گیا کہ مجھے کتنی قید ہوئی ہے، چنانچہ میں جانتا ہی نہیں تھا کہ مجھے رہا کب ہونا ہے۔ یہ حکام کی غلطی ہے جو مجھے رہا کرنا بھول گئے۔دوسرے یہ کہ میں جیل میں رہتے ہوئے دنوں کی گنتی ہی بھول گیا تھا۔“واضح رہے کہ سیوایگا کو چوری کے جرم میں نومبر 2008ءمیں 7سال قید کی سزا سنا کر جیل بھیجا گیا تھا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -