میں اتنے خوبصورت شخص کو کیسے کہہ سکتا ہوں کہ کیس چھوڑ دیں،چیف جسٹس پاکستان کا وکیل نعیم بخاری سے مکالمہ 

میں اتنے خوبصورت شخص کو کیسے کہہ سکتا ہوں کہ کیس چھوڑ دیں،چیف جسٹس پاکستان کا ...
میں اتنے خوبصورت شخص کو کیسے کہہ سکتا ہوں کہ کیس چھوڑ دیں،چیف جسٹس پاکستان کا وکیل نعیم بخاری سے مکالمہ 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ میں پی ٹی آئی رہنما قاسم سوری کے حلقے میں دوبارہ انتخابات کے فیصلے کیخلاف اپیل پرسماعت کے دوران وکیل نعیم بخاری نے کہاکہ جو بھی کرنا ہے جلدی سے کر دیں، آپ مجھے حکم دیتے ہیں تو میں کیس چھوڑ دیتا ہوں،چیف جسٹس نے کہاکہ میں اتنے خوبصورت شخص کو کیسے کہہ سکتا ہوں کہ کیس چھوڑ دیں۔

نجی ٹی وی چینل جیو نیوز کے مطابق سپریم کورٹ میں قاسم سوری کے حلقے میں دوبارہ انتخابات کے فیصلے کیخلاف اپیل پر سماعت ہوئی،چیف جسٹس پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں 4رکنی بنچ نے سماعت کی،چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ ہم سوچ رہے ہیں اس کیس میں کیا کریں،وکیل نعیم بخاری نے کہاکہ آپ صرف مجھے سن لیں اور فیصلہ دے دیں،چیف جسٹس نے نعیم بخاری سے استفسار کیا کہ کیا آپ کا قاسم سوری سے رابطہ نہیں ہے؟وکیل نعیم بخاری نے کہاکہ جی میرا بالکل قاسم سوری کے ساتھ رابطہ نہیں ہے،چیف جسٹس نے کہاکہ آپ اپنے کلائنٹ کو پکڑکر تو نہیں لا سکتے،قاسم سوری کو بتائیں کہ سپریم کورٹ کو ایسے استعمال نہیں ہونے دیں گے۔

وکیل نعیم بخاری نے کہاکہ جو بھی کرنا ہے جلدی سے کر دیں، آپ مجھے حکم دیتے ہیں تو میں کیس چھوڑ دیتا ہوں،چیف جسٹس نے کہاکہ میں اتنے خوبصورت شخص کو کیسے کہہ سکتا ہوں کہ کیس چھوڑ دیں،جسٹس مسرت ہلالی نے نعیم بخاری سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ آپ کورٹ سے کیوں بھاگ رہے ہیں؟آپ ان کو ہمارا پیغام پہنچائیں،وکیل نعیم بخاری نے کہاکہ میرا قاسم سوری سے کوئی رابطہ ہی نہیں ہے ، پیغام کیسے بھیجوں؟