سابق عراقی وزیر خارجہ طارق عزیزکو اردن میں دفن کرنے کی اجازت دے دی گئی

سابق عراقی وزیر خارجہ طارق عزیزکو اردن میں دفن کرنے کی اجازت دے دی گئی

  

بغداد (اے پی پی) عراق کے سابق وزیر خارجہ اور صدام کے قریبی ساتھی طارق عزیزکو اردن میں دفن کرنے کی اجازت دے دی گئی ۔ذرائع ابلاغ کے مطابق سابق عراقی آمر صدام حسین کے انتہائی قریبی ساتھی طارق عزیز جمعہ کو عراق کی ایک جیل میں حرکت قلب بند ہونے کے باعث 79 برس کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔وہ عراق پر امریکی اتحادی فورسز کے حملے کے بعد 2003ء سے جیل میں قید تھے۔ اِس دوران طارق عزیز کا خاندان اردن منتقل ہو گیا تھا اور اس کی درخواست پر بغداد حکومت نے طارق عزیز کو اردن میں دفن کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ صدام کے دور میں ہزاروں عراقیوں کے قتل میں ملوث ہونے کے جرم میں طارق عزیز کو 2010ء میں موت کی سزا سنائی گئی تھی۔

مزید :

عالمی منظر -