گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے اضافی بوجھ پڑے گا،خواجہ شاہ زیب اکرم

گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے اضافی بوجھ پڑے گا،خواجہ شاہ زیب اکرم

  

لاہور(لاہور(کامرس رپورٹر) پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسو سی ایشن فرنٹ(پیاف)کے چئیرمینعرفان اقبا ل شیخ اور وائس چیئرمین خواجہ شاہ زیب اکرم نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے آئی ایم ایف کے مطالبہ پر آئندہ مالی سال سے گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے صنعتوں پر اضافی بوجھ پڑے گا۔گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے پیداواری لاگت میں اضافہ اور ملک میں مہنگائی بڑھے گی۔انہوں نے کہا کہ صنعتیں بجلی گیس کی لوڈ شیڈنگ اور ٹیکسوں میں اضافہ سے پہلے ہی متاثرہورہی ہیں اسی لیے 2014-15 کیلئے جی ڈی بی کا ہدف بھی حاصل نہیں کیا جاسکا ہے۔اگر حکومت آئندہ مالی سال کیلئے اقتصادی ترقی کی شرح4.3%حاصل کرنا چاہتی ہے تو انڈسٹری کے لیے بجلی اور گیس کی قیمتوں کا تعین سال میں صرف ایک بار سالانہ بجٹ کے موقع پر کیا جائے۔

قیمتوں میں بار بار ر کا ردوبدل ملک کے پورے اقتصادی ڈھانچے کو ہلا کر رکھ دیتا ہے۔ چیئرمین نے کہا کہ توانائی بحران کا خاتمہ کے لیئے حکومت کی کاوششیں قابل تحسین ھیں اور صنعتوں کو مسلسل سستی بجلی و گیس فراہمی سے ہی اقتصادی ترقی کے اہداف حاصل کیے جاسکتے ہیں ۔عرفان شیخ نے کہا کہ عوامی مفاد کو مدنظر رکھتے ہوئے آئی ایم ایف سے مزید قرضوں کے حصول کیلئے ان کی شرائط پر بجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہ کیا جائے۔ ورنہ قیمتوں مین متوقع اضافہ سے مہنگائی میں ہو شربا اضافہ ہو جائے گا۔اور انڈسٹری مقابلے کی دوڑ سے باہر ہو جائے گی۔پیاف کے وائس چےئرمین خواجہ شاہ زیب اکرم نے کہا کہ بجلی اور گیس کی منصفافانہ ترسیل کو پاکستان کے دوسرے صبوبوں کی طرح پنجاب میں بھی ممکن بنایا جائے۔جس طرح دوسرے صوبوں میں گیس اور بجلی کے بحران کو نمٹنے کے لیے شیڈول پر سختی سے عمل کیا جاتاہے۔اس طرح پنجاب میں بھی اس پر عمل ہونا چاہیے۔

مزید :

کامرس -