ایران کے تعاون سے آج سے کوئٹہ، زاہدان’’کنٹینرسپیشل ‘‘ کا آغاز

ایران کے تعاون سے آج سے کوئٹہ، زاہدان’’کنٹینرسپیشل ‘‘ کا آغاز

  

لاہور(خبر نگار خصوصی)پاکستان ریلویز نے ایرانی ریلویز کے تعاون سے آج سے کوئٹہ، زاہدان’’کنٹینر اسپیشل ‘‘ کا آغاز کر دیا ہے۔ پاکستان سے چاول اور دیگر اشیائے ضرورت ایران جائیں گی اور وہاں سے گندھک، تارکول اور کیمیکلز پاکستان آئیں گے۔ یہ بات وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے گزشتہ روز ریلوے ہیڈکوارٹرز میں ایک پریس کانفرنس میں کی۔ اس موقع پر چیف ایگزیکٹو آفیسر جاوید انور، مشیر ریلوے انجم پرویز اور فنانس ایڈوائزر غلام مصطفی سمیت اعلیٰ ریلوے حکام بھی موجود تھے۔ اس موقع پر خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ تقریباً 4سال کے تعطل کے بعد شروع ہونے والی اس ٹرین کی آمد ورفت فی الحال ہفتے میں ایک بار ہوگی اور اس میں 24بوگیاں ہوں گی جن کی تعداد 40تک لے جانے کا پروگرام ہے۔ ایران اس ٹرین کے لیے سستے نرخ پر (15روپے فی لیٹر) دوہزار لیٹر تیل فراہم کرے گا۔ پاکستان نے پانچ ہزار لیٹر تیل کی خواہش کا اظہار کیا ہے، جس پر ایران نے ہمدردانہ غور کا وعدہ کیا ہے۔ وزیرریلوے نے مزید کہاکہ پاکستان ریلوے اسلام آباد سے کوئٹہ ، تفتان اور زاہدان کے راستے استنبول تک ای سی او(ECO) ٹرین چلانے کے لیے بھی تیار ہے اور اب ترکی کی طرف سے گرین سگنل کا انتظار ہے۔ اس کے لیے پاکستان نے بزنس کا بندوبست بھی کر لیا ہے۔ خواجہ سعد رفیق نے بتایا کہ اسلام آباد/کراچی گرین لائن کا تجربہ بہت کامیاب رہا ہے۔ اس میں سہولتوں میں مزید اضافہ کیا جارہا ہے۔ اس کے کرایوں کے فارمولے پر بھی نظرثانی کی گئی ہے تاکہ چھوٹے فاصلوں کے مسافر بھی استفادہ کرسکیں، اس کا اطلاق 20جون سے ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ گرین لائن کے کامیاب تجربے نے ہمیں نیا حوصلہ دیا ہے، ہم دیگر ٹرینوں میں بھی ویلیو ایڈیشن لائیں گے اور سہولتوں کے لحاظ سے کرایہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ 2014-15کے مالی سال کے لیے ہمیں آمدنی کا جو ہدف(28ارب روپے)دیا گیا تھا۔ ہم اس سے 3ارب روپے زائد (31ارب روپے )حاصل کرنے والے ہیں جس سے ریلوے کے خسارے میں اربوں روپے کی کمی ہوگی۔

کنٹینر اسپیشل

مزید :

صفحہ آخر -