بھائیوں کے تشدد سے تنگ نوجوان انصاف کیلئے دفتر" پاکستان" پہنچ گیا

بھائیوں کے تشدد سے تنگ نوجوان انصاف کیلئے دفتر" پاکستان" پہنچ گیا
 بھائیوں کے تشدد سے تنگ نوجوان انصاف کیلئے دفتر

  

لاہور(کرائم سیل) بھائیوں کے تشدد سے تنگ آ کر 17سالہ نوجوان انصاف کے حصول کے لیے دفتر" پاکستان" پہنچ گیا۔باپ کی وفات کے بعد بھائی وحشیانہ تشدد کا نشانہ بناتے ہیں، نوجوان کا موقف ۔نمائندہ "پاکستان" سے گفتگو کرتے ہوئے 17سالہ محمد طاہر نے بتایا کہ وہ داروغہ والہ کے علاقہ کا رہائشی ہے اور چپل بنانے کا کام کرتا ہے۔چند سال قبل اس کے والدفوت ہو گئے جس کے بعد سے اس کے بڑے بھائیوں نے اس پر تشدد کرنا شروع کر دیا اور اس کو کئی دفعہ دو تین دن کمرے میں بند بھی کر دیتے ہیں جبکہ اس کو لکڑیوں اور اینٹوں سے مارنا ان کا روزانہ کا معمول ہے ۔اس نے کہا کہ اس حوالے سے وہ تھانہ مناواں میں درخواست لیکر بھی گیا لیکن پولیس اہلکاروں نے اس کا مذاق اڑا کر اسے واپس بھیج دیا ۔پولیس حکام اس کی داد رسی کریں ۔اس حوالے سے تھانہ مناواں میں رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ محمد طاہردرخواست لیکر تھانے نہیں آیا ،اگر آتا تو کارروائی کی جاتی جبکہ اس کے بھائیوں کا کہنا تھا کہ الزامات میں کوئی صداقت نہیں ہے، انہوں نے طاہر پر کبھی تشدد نہیں کیا۔

مزید :

علاقائی -