رشوت نہ دینے پر مبینہ پولیس تشدد، ڈرائیور ہلاک، ورثاء کا نعش رکھ کر دھرنا

رشوت نہ دینے پر مبینہ پولیس تشدد، ڈرائیور ہلاک، ورثاء کا نعش رکھ کر دھرنا
رشوت نہ دینے پر مبینہ پولیس تشدد، ڈرائیور ہلاک، ورثاء کا نعش رکھ کر دھرنا

  

وہاڑی (ویب ڈیسک) سوروپے رشوت کے بدلے پولیس نے ٹرک ڈرائیور کو تھانہ کی حوالات میں تشدد کرکے جاں سے مار ڈالا۔ ورثا نے ملتان بورے والہ روڈ پر لاش رکھ کر پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ اس دوران شدید گرمی کی وجہ سے ایک خاتون بیہوش ہوگئی۔ وہاڑی طارق بن زیاد کالونی موہانہ بستی کارہائشی محمد اشریف ولد نبی بخش ٹرک پر وہاڑی آرہا تھا کہ 100بل چوکی کے قریب پٹرولنگ پولیس نے ضروری کارروائی کیلئے روکا کاغذات اور لائسنس کی عدم موجودگی پر پٹرولنگ پولیس نے ٹرک ڈرائیور کو تھانہ 100 پل چوکی پولیس کے حوالے کردیا.

پولیس نے ٹرک ڈرائیور کو حوالات میں بند کردیا جبکہ ورثا اور ٹرک کلنڈر کے مطابق پولیس نے ڈرائیور سے مبینہ طور پر رشوت کا مطالبہ کیا ڈرائیور محمد اشرف نے رشوت سے انکار کیا تو پولیس اہلکار نے ڈرائیور کو مبینہ تشدد کا نشانہ بنایا۔ حالت خراب ہونے پر اشرف کو فوری ہسپتال شفٹ کرنے کی کوشش کی مگر ٹرک ڈرائیور تاب نہ لوتے ہوئے جاں بحق ہوگیا۔ پولیس نے مقتول کے ورثاء کو اطلاع دی جس پر ورثاء نے بوریوالہ میں احتجاجی دھرنا دیا اور نعش کو وہاڑی دانیوال پھاٹک ملتان روڈ بوریوالہ پر نعش رکھ کر مظاہرہ کیا۔ طویل احتجاج کے باعث ٹریفک جام ہوگئی۔ مظاہرین گھنٹوں نعش سڑک کے درمیان رکھ کر پولیس اور پنجاب حکومت کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے۔ آکری اطلاعات کے مطابق مقامی ایم پی اے اور ڈی پی او نے ورثاء سے مذاکرات کئے اور مبینہ تشدد پر فوری جوڈیشل انکوائری کا حکم دیا، جس پر مظاہرین منتشر ہوگئے۔

مزید :

وہاڑی -