رنگ ریلیاں منانے والے نوجوان لڑکے لڑکیوں کو سعودی جج نے ایسی انوکھی سزا سنائی کہ آئندہ ایسی حرکت سے قبل ہزار بار سوچیں گے

رنگ ریلیاں منانے والے نوجوان لڑکے لڑکیوں کو سعودی جج نے ایسی انوکھی سزا ...
رنگ ریلیاں منانے والے نوجوان لڑکے لڑکیوں کو سعودی جج نے ایسی انوکھی سزا سنائی کہ آئندہ ایسی حرکت سے قبل ہزار بار سوچیں گے

  

جدہ (نیوز ڈیسک) عام طور پر آپ نے سنا ہوگا کہ شراب نوشی یا اس قسم کی محفلیں منعقد کرانے والوں کو سعودی عرب میں کوڑوں یا قید کی سزا سنائی جاتی ہے۔ تاہم حال ہی میں ایک سعودی جج نے نوجوانوں کو جیل بھیجنے کی بجائے انتہائی منفرد سزا سنا ڈالی۔ ’اجل‘ اخبار کے مطابق جدہ میں ایک جج کے پاس 2 نوجوان لڑکوں اور 2 لڑکیوں کو پیش کیا گیا۔ انہیں پولیس نے شراب نوشی کی محفل سے رنگے ہاتھ گرفتار کیا تھا۔ تاہم جج نے جیل بھیجنے کی بجائے لڑکوں کو آپشن دیا کہ وہ پانچ قبریں کھودیں۔ا سی طرح دونوں لڑکیوں کو ہسپتال جاکر آئی سی یو میں موجود 10 مریضوں کی تیمارداری کا حکم دیا۔ اس سزا پر سوشل میڈیا صارفین نے حیرت کا اظہار کیا وہاں بہت سے لوگوں نے سراہا بھی کہ سزا کا اصل مقصد غلطی کا احساس دلانا ہوتا ہے اور بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ اس جج نے یہ کام بخوبی انجام دیا۔

مزید :

بین الاقوامی -