رواں سال ستمبر میں دنیا تباہ ہو جائے گی ، ماہرین فلکیات نے پیش گوئی کر دی

رواں سال ستمبر میں دنیا تباہ ہو جائے گی ، ماہرین فلکیات نے پیش گوئی کر دی
رواں سال ستمبر میں دنیا تباہ ہو جائے گی ، ماہرین فلکیات نے پیش گوئی کر دی

  

نیویارک ( مانیٹرنگ ڈیسک ) ماہرین فلکیات نے رواں سال ستمبر میں دنیا کی تباہی کا پیغام سنا دیا ہے اور ان کے مطابق انتہائی بڑی جسامت رکھنے والے شہاب ثاقب زمین سے ٹکرا کر اسے تباہ کر دیں گے جبکہ کچھ کا خیال ہے کہ یہ دنیا شہاب ثاقب کے زمین سے ٹکرانے سے قبل ہی تباہ ہو جائے گی ۔

ماہرین فلکیات اور دنیا کی تباہی سے متعلق پیش گوئی کرنے والے افراد نے دنیا بھر کی ویب سائٹس پر جاری اپنے پیغامات میں کہا ہے کہ بڑے سائز کے شہاب ثاقب زمین کی جانب تیزی سے بڑھ رہے ہیں اور یہ شہاب ثاقب 22 ستمبر سے 28 ستمبر کے دوران زمین سے ٹکرا جائیں گے جو کہ دنیا کی تباہی کا سبب بنے گا ۔ انہوں نے مزید انکشاف کیا ہے کہ عالمی دنیا کے سیاستدان اس راز سے واقف ہیں لیکن وہ دنیا سے اس بات کو چھپا رہے ہیں۔ اس حوالے سے ماہر بلاگرز کا کہنا تھا کہ شہاب ثاقب کا زمین کی جانب تیزی سے بڑھنا سرن کے تحت ہونے والے تجربے لارج ہیڈن کولائیڈر کی وجہ سے ہے جبکہ اس کے مدار میں بنا ہوا اس کا لوگو 666 تباہی کی علامت ہے ۔

دوسری جانب ناسا کے سائنسدانوں کی جانب سے اس پیش گوئی کو مسترد کر دیا گیا ہے اور ان کا موقف ہے کہ شہاب ثاقب کے زمین پر پہنچنے کے لیے سب سے بڑی مشکل انتہائی گرم ماحولیاتی فرکشن ہے جس کے باعث یہ زمین پر پہنچنے سے قبل ہی تباہ ہو جائیں گے ۔ ناسا کے ترجمان نے اس پیش گوئی کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ عام طور پر شہاب ثاقب گرمی کی وجہ سے زمین پر پہنچنے سے قبل ہی جل جاتے ہیں اور اس کے علاوہ موجودہ حالات میں کوئی بھی ایسا شہاب ثاقب موجود نہیں ہے جو زمین سے ٹکرانے کے راستے پر اپنا سفر جاری رکھے ہوئے ہو ۔ ناسا ترجمان نے مزید واضح کیا کہ آنے والے سینکڑوں سالوں تک کوئی ایسا شہاب ثاقب زمین سے نہیں ٹکرائے گا ۔

مزید :

ماحولیات -