صوبائی بجٹ میں ہائر ایجوکیشن کمیشن کیلئے قابل ذکر رقم مختص کی گئی ہے، ڈاکٹر نظام الدین

صوبائی بجٹ میں ہائر ایجوکیشن کمیشن کیلئے قابل ذکر رقم مختص کی گئی ہے، ڈاکٹر ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)کے صوبائی بجٹ میں ہائر ایجوکیشن کمیشن کے لئے فنڈز کی ایک قابل ذکر رقم مختص کی گئی ہے ۔جس میں لیڈرشپ اینڈ فیکلٹی ڈویلپمنٹ اکیڈیمی کے لیے 1500 ملین، صوبے کے اعلی تعلیمی اداروں میں سائنس کی تعلیم کے فروغ کے لیے 50 ملین ، پنجاب میں کمیونٹی کالجز کے قیام کے لئے 108 ملین روپے کی رقم مختص کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ دیگر ترقیاتی پروگراموں کے لئے 500160 ملین کی رقم پنجاب ہائر ایجوکمیشن کمیشن کے لیے مختص کی گئی ہے۔ چیئرپرسن PHEC پروفیسر ڈاکٹر محمد نظام الدین نے اعلی تعلیم کے بجٹ میں اضافے کے حوالے سے پنجاب حکومت کے اقدامات کو سراہا ہے کہ اس سے وزیر اعلیٰ کے قائم کردہ پنجاب ہائر ایجوکمیشن کمیشن کو استحکام ملے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ" مختص بجٹ سے نئے ترقیاتی منصوبوں کا آغاز کیا جائے گا جس سے اعلیٰ تعلیم کو بین الاقوامی معیار کے برابر لانے کے وزیر اعلیٰ پنجاب کے وژن کی تکمیل میں مدد ملے گی"۔ یہ بات انہوں نے PHEC سیکرٹریٹ ارفع سافٹ ویئر ٹیکنالوجی پارک لاہور میں جاری سینئر مینجمنٹ کمیٹی کے ایک اجلاس سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

ڈاکٹر نظام الدین نے مزید کہا کہ پی ایچ ای سی مالی سال 2017-18میں پہلے سے قائم شدہ یونیورسٹیوں کے کیمپسز کو مزید بہتر بنانے کے علاو ہ نئی یونیورسٹیوں اور ذیلی کیمپس کے قیام سمیت کئی نئے اور اہم اقدامات اٹھا رہی ہے جس سے پنجاب میں اعلی تعلیم کے معیار میں مزید بہتری آئے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ"بجٹ میں اضافے سے پی ایچ ای سی کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط بنانے میں مدد ملے گی ا نہوں نے مزید کہا کہ رواں مالی سال صوبے میں 50 نئے ڈگری کالجز کے قیام کے علاوہ 30 موجودہ سرکاری کالجز میں جدید سہولیات میسر کی جائیں گئی اور خواجہ فرید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی رحیم یار خان کی عمارت مکمل کی جائے گی۔ پنجاب ہائیر ایجوکیشن کمیشن اپنے منصوبوں سے صوبہ میں اعلی تعلیم کے شعبہ میں بہتر اصلاحات لانے کے لئے پر عزم ہے اور اسی لئے اس کی توجہ تعداد کی بجائے معیار پر ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4