عالمی اقتصادی فورم کے مسابقتی اشاریوں میں 4درجہ بہتری، پاکستان 122ویں نمبر پر آگیا

عالمی اقتصادی فورم کے مسابقتی اشاریوں میں 4درجہ بہتری، پاکستان 122ویں نمبر پر ...

اسلام آباد (این این آئی)قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین قمر زمان چوہدری نے کہا ہے کہ پاکستان گذشتہ سال کے مقابلہ میں 2016-17ء میں عالمی اقتصادی فورم کے مسابقتی اشاریوں میں 4 درجہ بہتری سے 122 ویں نمبر پر آ گیا ہے، نیب کی انسداد بدعنوانی پالیسیوں کے مثبت نتائج(بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

سامنے آ رہے ہیں اور گذشتہ تین سالوں کے دوران پاکستان کی درجہ بندی میں مسلسل بہتری آ رہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیف ایگزیکٹو آفیسر مشال اور عالمی اقتصادی فورم کے نمائندے عامر جہانگیر سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب افسران معاشرہ سے بدعنوانی کی لعنت کے خاتمہ کیلئے ہر ممکن اقدامات کر رہے ہیں جس کی وجہ سے پاکستان کی بدعنوانی کی روک تھام کے حوالہ سے درجہ بندی میں بہتری آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی اقتصادی فورم کے عالمی مسابقتی اشاریہ میں بہتری سے قوموں میں پاکستان کا تشخص بہتر ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ بدعنوانی سے عام آدمی سب سے زیادہ متاثر ہوتا ہے جب اس کی فلاح و بہبود کیلئے استعمال ہونے والے فنڈز خوردبرد کر لئے جاتے ہیں تاہم پاکستان کی درجہ بندی میں بہتری سے بالآخر عام آدمی کو فائدہ پہنچے گا اور فنڈز ان کی فلاح و بہبود، صحت، تعلیم اور صاف پانی کی فراہمی سمیت بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے استعمال کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی اقتصادی فورم کی 2016-17ء کی سالانہ عالمی مسابقتی رپورٹ سے بھی ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کے کرپشن پرسپشن انڈیکس کی عکاسی ہوتی ہے۔ چیف ایگزیکٹو آفیسر مشال اور عالمی اقتصادی فورم کے نمائندے عامر جہانگیر نے کہا کہ عالمی اقتصادی فورم کی 2016-17ء کی سالانہ عالمی اقتصادی رپورٹ کا نمایاں پہلو یہ ہے کہ ایسے ادارے جن میں اصلاحات کی گئی ہیں اور ان کا متعلقہ فریقوں سے مسلسل رابطہ ہے ان میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ انہوں نے چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری کی قیادت میں نیب کی کارکردگی کو سراہا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر