شیخ رشید 35 سال سے جاپان میں یہ کاروبار کررہے ہیں،اہم انکشاف منظر عام پر آگیا

شیخ رشید 35 سال سے جاپان میں یہ کاروبار کررہے ہیں،اہم انکشاف منظر عام پر آگیا
شیخ رشید 35 سال سے جاپان میں یہ کاروبار کررہے ہیں،اہم انکشاف منظر عام پر آگیا

  


ٹوکیو (عبدالباسط بلوچ سے) شیخ رشید اور مسلم لیگ جاپان کے عہدیدار ملک نور محمد میں پیسوں کا تنازعہ اس وقت موضوع بحث بنا ہوا ہے لیکن اب انکشاف ہوا ہے کہ شیخ رشید کا گزشتہ کئی دہائیوں سے جاپان میں کاروبار ہے اور وہ اکثر وہاں آتے جاتے رہتے ہیں۔ دوسری جانب ملک نور محمد اور شیخ رشید کے مابین پیسے کی جنگ نے جاپان کا بھی رخ کرلیا ہے ۔دونوں کے حمائتیوں میں لفظی تکرار کسی ناخوشگوار واقعہ کو جنم دے سکتی ہے کیونکہ جاپان میں شیخ رشید کے بھی حمایتی موجود ہیں ۔

شیخ رشید کی پارلیمنٹ ہاوس آمد کے موقع پر ایک شخص نے انہیں گھیر کر 22لاکھ روپے کا مطالبہ کردیا

ذرائع کے مطابق شیخ رشید اپنے کاروبار کے سلسلے میں 1980سے جاپان آ رہے ہیں۔ شیخ رشیدکا خاندانی طور پرریشم کا بزنس ہے۔وہ یہاں سے ریشم پاکستان کی قالین انڈسٹری کو مہیا کرتے تھے۔جبکہ مبینہ طور پرجاپان میں قالین بافی کے لئے بھی وہ ریشم فراہم کرتے ہیں ۔ ان کی جاپانی لوگوں سے بھی ریشم کے بزنس کے حوالے سے ملاقاتیں رہتی ہیں۔اس سلسلے میں تین چار سال پہلے بھی وہ بزنس کے سلسلے میں ٹوکیو سے پانچ سو کلومیٹر دور ٹویامہ آئے اور وہاں ریشم کے حوالے سے جاپانی کاروباری لوگوں سے ملاقاتیں بھی کیں۔ اس دورے میں وہ بغیر کسی سیکیورٹی اور پروٹوکول کے عام آدمی کی طرح پھرتے نظر آتے تھے۔ جاپان سے ان کی شنا سائی تقربیاً 37 سالوں پر محیط ہے۔اس دوران وہ بطور وزیر بھی کئی بار جاپان آ چکے ہیں۔

مزید : قومی