کہاں گیا آئین ، قانون اور آرٹیکل 6؟ نواز شریف

کہاں گیا آئین ، قانون اور آرٹیکل 6؟ نواز شریف

اسلام آباد، منڈی بہاؤالدین (سٹاف رپورٹر،نمائندہ پاکستان ،این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن)کے قائد ٗسابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ پرویز مشرف پر ایک طرف سنگین غداری کامقدمہ دوسری طرف الیکشن لڑنے کی مشروط اجازت مل گئی ٗکدھر گیاآئین و قانون،آرٹیکل 6،اورکدھر گئے سارے مقدمے؟سب کچھ قانون سے بالا تر ہورہاہے ٗمشرف جیسے شخص کوکیسے گارنٹی دی جا سکتی ہے جوبگٹی قتل کیس میں،ججوں کو نظر بند کرنے،12مئی کیواقعہ میں اور2بارآئین توڑنے میں شامل ہو ٗ چیف جسٹس صاحب کہہ رہے ہیں مشرف کو گرفتار نہ کیا جائے ٗ یہ کون سا آئین ہے ٗاس آئین کی شق ہمیں بھی پڑھا دیں ٗ دوسری طرف مجھے بیگم کی عیادت کیلئے3 دن کا استثنا بھی نہیں مل رہا،مجھے تاحیات نا اہل کر دیا گیا ٗایک جانب مشرف کو رعایت دی جارہی تو دوسری جانب مجھے بیمار بیوی سے ملنے کے لیے 3 دن کی استثنیٰ تک نہیں دی گئی۔ جمعہ کو سابق وزیراعظم نوازشریف نے احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کی۔پرویز مشرف کے حوالے سے سوال پر سابق وزیراعظم نواز شریف نے جواب دیا کہ سب کچھ قانون سے بالاتر ہو رہا ہے،مشرف جیسے شخص کوکیسے گارنٹی دی جا سکتی ہے جوبگٹی قتل کیس میں،لال مسجد کیس ٗججوں کو نظر بند کرنے،12مئی کیواقعہ میں اور2بارآئین توڑنے میں شامل ہو۔انہوں نے شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ ہماری عقل و فراست میں یہ بات نہیں آ رہی کہ کوئی قتل کردے،آئین توڑدے،تباہی پھیردے،چیف جسٹس چاہیں گے تو اسے کچھ نہیں کہاجائیگا ٗآپ کہہ رہے ہیں اسے گرفتار نہ کیا جائے ٗ یہ کون سا آئین ہے اس آئین کی شق ہمیں بھی پڑھا دیں۔انہوں نے کہا کہ دوسری طرف مجھے بیگم کی عیادت کیلئے3 دن کا استثنا بھی نہیں مل رہا،مجھے تاحیات نا اہل کر دیا گیا۔انہوں نے سوال کیا کہ کس آئین اور قانون میں مشروط اجازت دینے کا لکھا ہے ٗہمیں بھی دکھا دیں ٗسب لوگ حیرت میں ڈوبے ہوئے ہیں کہ چیف جسٹس ایسا حکم کیسے دے سکتے ہیں۔کیا اس ملک میں ایسا قانون ہے جو اعلیٰ عہدے پر بیٹھے کسی شخص کو بااختیار بناتا ہے کہ وہ فوجی آمر کو یقین دہانی کرائے؟اس دوران صحافی کی جانب سے جب پوچھا گیا کہ آپ کیا سمجھتے ہیں کہ ان یقین دہانیوں کے بعد پرویز مشرف واپس آجائیں گے؟ تو اس پر انہوں نے کہا کہ میں مفروضات پر کوئی تبصرہ نہیں کروں گا۔گزشتہ روز چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس ثاقب نثار نے تاحیات نااہلی کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کو 13 جون کو لاہور رجسٹری میں طلب کرتے ہوئے ریمارکس دیئے تھے کہ 'پرویز مشرف میرے سامنے پیش ہوجائیں، انہیں گرفتار نہیں کیا جائیگا۔واضح رہے کہ سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس بھی زیرسماعت ہے جس میں خصوصی عدالت نے ان کی انٹرپول کے ذریعے گرفتاری کا حکم دے رکھا ہے۔منڈی بہاؤالدین میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا اب ملک پر عوام کی حکمرانی ہو گی آج منڈی بہاؤالدین سے تحریک جنم لے رہی ہے احتساب عدالت میں آج92 ویں پیشی بھگت کر آیا ہوں انتخابات میں25 جولائی کو دھاندلی کرنے والوں کا راستہ روکنا ہو گاانہوں نے کہا کہ مجھے سیاست سے آؤٹ کرنے کیلئے پارٹی کی صدارت سے بھی ہٹایا گیا ہے کچھ لوگوں کی خواہش ہے کہ میں جیل جاؤں میں جیل بھی گیا تو عوام سے رابطے ختم نہیں ہوں گے یہاں کی عوام کا جذبہ ریفرنڈم ہے ووٹ کے تقدس کی جد و جہد کو نہیں چھوڑیں ہم نے نوجوانوں کے حقوق کیلئے علم بلند کر دیا ہے70 سال سے پاکستانی عوام کے ساتھ زیادتی ہو رہی ہے اب ایسا نہیں ہونے دیں گے انہوں نے کہا کہ نواز شریف اپنے لیے نہیں آپ کی نسلوں کیلئے لڑ رہا ہے۔25 جولائی کو عوام مسلم لیگ ن کے حق میں فیصلہ دینگے۔ہم نے جتنے بھی دعوے کیے پورے کیے ہیں مریم نواز نے اپنے خطاب میں کہا کہ نواز شریف پاکستان کی عوام کی جنگ لڑ رہا ہے ان کو پاکستان کی محبت کی وجہ سے عدالتوں میں گھسیٹا جا رہا ہے آج میں عوام کے اس ٹھاٹھیں مارتے سمندر میں وہ جذبہ دیکھ رہی ہوں جو پاکستان بناتے وقت تھا۔ہمیں عدالتوں سے خوف نہیں ہے لیکن آج ہمیں والدہ سے ملنے کیلئے پانچ دن کا استعفیٰ نہیں دیا جا رہا3 بار ملک سے وزیر اعظم رہنے والے کے لیے ملک دوستی کی سزا دی جا رہی ہے25 جولائی کا سورج ملک دشمنوں کیلئے زمین تنگ کر دے گا اور عوام صرف مسلم لیگ ن کو ووٹ دیکر اکثریت سے کامیاب کروائیں گے۔

نواز شریف

مزید : صفحہ اول