قومی سلامتی کمیٹی ، ایف اے ٹی ایف سے متعلقہ اقدامات پر اظہار اطمینان ، عالمی اداروں سے ملکر کام کرنے کے عزم کا اعادہ

قومی سلامتی کمیٹی ، ایف اے ٹی ایف سے متعلقہ اقدامات پر اظہار اطمینان ، عالمی ...

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصرالملک کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا پہلا اجلاس ہوا جس میں مسلح افواج کے سربراہان، نگران وفاقی وزرا سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں اندرونی وبیرونی صورتحال سمیت سرحدی امور کا جائزہ لیا گیا۔عسکری حکام نے بریفنگ دی اور دہشت گردوں کے خلاف جاری کارروائیوں سمیت دیگر اقدامات سے آگاہ کیا ۔ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں نگران وزیر خزانہ شمشاد اختر نے ایف اے ٹی ایف کے آئندہ اجلاس سے متعلق تیاریوں پر بریفنگ دی اور اس حوالے سے درکار قانونی اور انتظامی اقدامات سے متعلق بریف کیا۔ذرائع کے مطابق قومی سلامتی کمیٹی نے ایف اے ٹی ایف سے متعلقہ اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا۔اس کے علاوہ وزیراعظم نے کمیٹی کو گزشتہ روز امریکی نائب صدر سے ہونے والی ٹیلیفونک گفتگو سے بھی آگاہ کیا۔اعلامیہ کے مطابق قومی سلامتی کمیٹی کا کہنا ہے کہ پاکستان عالمی سطح پر ذمہ داریوں کو پورا کررہا ہے اور مشترکہ مفادات اور اہداف کے حصول کیلئے عالمی تنظیموں کے ساتھ تعاون کررہے ہیں جبکہ ایف اے ٹی ایف کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لیے تمام اقدامات اٹھائیں گے۔قومی سلامتی کمیٹی نے مشترکہ اہداف اور مقاصد کے حصول کیلئے فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس اور دیگر عالمی اداروں کیساتھ پاکستان کے مل کر کام کرنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

قومی سلامتی کمیٹی

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)نگران وزیراعظم جسٹس(ر) ناصر الملک نے کہاہے اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق کشمیریوں کو حق ملنا چاہیے، پاکستان کشمیر یوں کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔ جمعہ کو نگران وزیراعظم ناصر الملک سے صدر آزاد کشمیر نے ملاقات کی۔ ملاقات میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق نگران وزیراعظم کو آگاہ کیا، کشمیر کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے ناصر الملک نے کہا پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا، اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کو حق ملنا چاہیے، دہائیوں سے متنازعہ معاملے کو بات چیت سے ہی حل کیا جا سکتا ہے۔

مزید : صفحہ اول